fbpx

طارق بشیر چیمہ کی پریس کانفرنس پر وکلاء کی مذمت،حسان مصطفیٰ

ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن میں صدر بار حسان مصطفیٰ ایڈووکیٹ جنرل سیکرٹری عمران اشرف ایڈووکیٹ کی زیر صدارت بار روم میں جنرل باڈی کاہنگامی اجلاس منعقد ہوا،

اجلاس فقیر بخش کورائی ایڈووکیٹ کی استدعا پرمنعقد ہوا،اجلاس میں وفاقی وزیر طارق بشیر چیمہ کی چند روز قبل ہونے والی پریس کانفرنس میں جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کی مخالفت کرنے پر وکلاء کی جانب سے مذمت کی گئی،طارق بشیر چیمہ کی پریس کانفرنس سے وکلاء میں شدید غم و غصہ پایاجا رہاہے،تفصیل کے مطابق ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن رحیم یارخان کی جنرل باڈی کا ہنگامی اجلاس فقیر بخش کورائی ایڈووکیٹ کی استدعا پر منعقد ہوا،اجلاس وفاقی وزیر طارق بشیر چیمہ کی چند روز قبل ہونے والی پریس کانفرنس میں جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کی مخالفت کرنے پرمنعقد کیاگیا،اجلاس میں نائب صدر ڈسٹرکٹ بار آغاعامر،مبشرنزیر لاڈ،رانا شیراز،اختر چہور، رئیس نیاز چاچڑ،نعیم مہاندرہ،بشارت ہندل،سلیم اللہ خان جتوئی،رانا شیر افگن، طیب چدھڑ، جام عبدالمجید مصطفائی، راجہ فرخ غازی سمیت وکلاء کی کثیر تعداد نیشرکت کی،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے فقیر بخش کورائی ایڈووکیٹ نے کہا کہ وفاقی وزیر طارق بشیر کی جانب سے جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کی مخالفت پر میں مذمت کرتا ہوں،انہوں نے کہا کہ ہم صوبہ سرائیکستاں کے علاوہ اور کوئی صوبہ بھی تسلیم نہیں کرتے اور مطالبہ کرتے ہیں کہ اب صوبہ سرائیکستان ہی بنایا جائے،انہوں نے کہا کہ ہم نے پسماندہ علاقہ میں رہ کر تحت لاہور کو اتنا عرصہ برداشت کیااب انہیں بھی چاہیے کہ ہمیں برداشت کرے، نائب صدر ڈسٹرکٹ بار آغا عامر نے ایڈووکیٹ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اب وقت آگیا ہے آوقز اٹھانا کا ہم بھی پنجاب کا حصہ ہے،ہمارا بھی تحت لاہور جتنا حق بنتا ہے انہوں نے کہا کہ ہم صوبہ سرائیکستان بنانے کی بھرپور حمایت کرتے ہیں اور اب اپنا علیحدہ صوبہ سرائیکستان لے کر رہے گے،انہوں نے کہا ہم نے پوری زندگی ان کی غلامی کی ہے لیکن اب ایسا نہیں ہو گا ہمیں اگر ہمارا حق نا ملا تو ہم اپنا حق لے کر رہے گے،ہمارے بزرگوں نے پاکستان کیلیے قربانیاں دی ہے،اجلاس سے وکلاء نے بیان کرتے ہوئے کہ کہ ہم سب بھائی بھائی ہیں، ہمیں صرف صوبہ بہاولپور بنے سے ہی فائدہ ہو گا اور مطالبہ کرتے ہیں کہ صوبہ بہاولپور بنایا جائے، تاکہ ہمیں روزگار مل سکے اور بچوں کو اچھی نوکری مل سکے،ہمارے شہر میں خواجہ فرید یونیورسٹی آف انجینئرنگ بن چکی ہے جو اب ان لوگوں کو برداشت نہیں ہو رہی ہے،وکلاء نے مزید کہا کہ سیکرٹریٹ بہاولپور میں بنا چاہیے اور بہاولپور ایک الگ صوبہ ہونے چاہیے تاکہ ہمارے مسائل فوری حل کیا جا سکے،وکلاء نے مزید کہا کہ مفاد پرست ٹولہ ہمیں صرف ذلیل و خوار کر رہا ہے اور آپس میں لڑوا کر اپنے مفادات حاصل کر ہا ہے،تبدیلی صرف وکلاء، نوجوان،اور پڑھے لکھے لوگ ہی لاسکتے ہیں باقی سب سیاسی باتیں ہیں،ہمارے شہر میں شیخ زید میڈیکل کالج ہسپتال، یونیورسٹیاں، کالجز، سکولز بڑے بڑے کاروباری ادارے ہیں جو اب مخالف لوگوں کو ہضم نہیں ہو رہی و اس بات کا فائدہ اٹھا کر اپنی سیاست کر کے ہمیں استعمال کر رہے ہیں،وکلاء نے کہا کہ ہمیں چاہیے کہ ہم آئینی راستہ اختیار کرے،اور اپنے بچوں کا مستقبل دیکھتے ہوئے صوبہ کا مطالبہ کرے،طارق بشیر چیمہ کی پریس کانفرنس سے صوبہ نہیں بن جانا صوبہ انتظامی معاملات کے بعد کی بنا ہے اور ن لیگ کی حمایت کے بغیر صوبہ بننا ناممکن ہے،وکلاء نے کہا کہ صوبہ بنانا تو بعد کی بات ہے ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ رحیم یارخان میں شیخ زید ہسپتال و میڈیکل کالج اور خواجہ فرید یونیورسٹی میں نوکریوں کا کوٹہ رکھا جائے،تاکہ ضلع رحیم یارخان کی عوام جو ٹیل پر بیٹھی ہے انہیں اپنا حق مل سکے،اس موقع پرصدرحسان مصطفے نے کہاکہ تمام ساتھیوں کی تجاویزوآراء قابل تحسین ہیں‘ انہوں نے نشاندہی کی کہ اجلاس میں بحث کی گئی ہے لیکن کورم مکمل نہ ہونے کی وجہ سے فیصلہ نہیں کرسکتے‘ انہوں نے کہاکہ وکلاء نے ہمیشہ حق اورسچ کی خاطر آوازبلندکی ہے اورآئندہ بھی کرتے رہیں گے‘ اس خطے کی محرومیوں کے خاتمے کے لیے جدوجہدکرتے رہیں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »