fbpx

 ڈائریکٹر اینٹی کرپشن نے 80کروڑ روپے کی انکوائری ڈیپارٹمنٹل کردی

 ڈائریکٹر اینٹی کرپشن بہاول پور نے 80کروڑ روپے کی انکوائری مبینہ طور پر ایک کروڑ رشوت پر ڈیپارٹمنٹل کردی،اینٹی کرپشن نے مبینہ طور پر ایک کروڑ روپے سے زائد کی رشوت لی، سیم نالہ چنی گوٹھ تا فیروزہ براستہ تحصیل لیاقت پور کروڑوں روپے میگا کرپشن انکوائری انٹی کرپشن مافیا نے ڈراپ کرنے کیلئے ڈیپارٹمنٹل کردی محکمہ انہار کے افسران کے خلاف انکوائری بھی محکمہ انہار کے ایس ای کے سپرد کردی گئی ڈائریکٹر انٹی کرپشن بہاولپور عمران رضا عباسی اپنے ماتحت افسرا ن اور میں ملزم ساجد محمود سابق ایکسئین انہار وغیرہ سے ساز باز کرکے منصوبہ تعمیر و بحالی سیم نالہ از چنی گوٹھ تا فیروزہ مالیت80کروڑ روپے عباسیہ سب ڈویژن تحصیل لیاقت پور ضلع رحیم یار خان ملزمان کے ہاتھوں فروخت کردی،پارسائی کے دعویدار ڈائریکٹر انٹی کرپشن نے تا حال اربوں روپے مالیت سرکاری نقصان والے میگا کرپشن کیسوں اور انکوائریوں میں کرپشن کے سابقہ ریکارڈ توڑ دیئے  ہیں چیئرمین عوامی احتساب پارٹی غلام رسول خان نے ملکی مفاد میں درخواست بر خلاف ساجد محمود ایکسئین،سب انجینئر رانا عبدالرزاق،سب انجینئر عامر سعید(مرحوم)،ٹھیکیدار متعلقہ /ٹھیکیدار ملک اطہر،اکاؤ نٹس اورآڈٹ آفیسر متعلقہ محکمہ انہار عباسیہ سب ڈویژن تحصیل لیاقت پور ضلع رحیم یار خان میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ متذکرہ بالا سرکاری آفیسرز اور عملہ محکمہ انہار اور دیگر ایکسئین،سب انجینئرز وغیرہ عباسیہ سب ڈویژن نے منصوبہ تعمیر و بحالی سیم نالہ از چنی گوٹھ تا فیروزہ تحصیل لیاقت پور ضلع رحیم یار خان مالیت تقریباً80کروڑ روپے کے کام میں کمیشن کے نام پر بھاری رشوت کی وصولی کی بناء پر ٹھیکیدار سے کنٹریکٹ ایگریمنٹ کے برعکس ناقص اور نا مکمل کام کروایا ہے پلیوں کی تعمیر میں بھی ناقص میٹریل کم ریشو میٹریل استعمال کیا گیا ہے پہلے سے تعمیر شدہ پلیوں کا میٹریل بھی چیک کیا جائے پلیوں کی جائنٹ بھی مکمل نہ ہیں اور شٹرنگ بھی نہیں کی گئی موقع پر نا مکمل اور غیر میعاری اور ایگریمنٹ کے برعکس کام کی وجہ سے حکومت کو کروڑوں روپے کا نقصان پہنچایا گیا ہے یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ ڈائریکٹر انٹی کرپشن کی سربراہی میں سابق ڈائریکٹر جنرل انٹی کرپشن مظفر علی رانجھا کی ملی بھگت سے انٹی کرپشن بہاولپور میں درجنوں میگا کرپشن انکوائریوں اور مقدمات کے مدعیوں کو راستے سے ہٹانے کیلئے شرمناک منصوبہ بندی کی گئی جس کے تحت ڈویژن بہاول پور کے متعدد درخواست دہند گان کے خلاف دہشت گردی جرائم کے جھوٹے مقدمات درج کروائے گئے لیکن ان جھوٹے مقدمات میں سے دوران سماعت  کچھ مقدمات جھوٹے ثابت ہو گئے جس کے نتیجے میں فاضل سپیشل جج انسداد دہشت گردی کورٹ بہاولپور ڈویژن نے کچھ صحافیوں کو باعزت بری فرماتے ہوئے مخالف فریقین کو جھوٹا اور کرپٹ قرار دیا واضح رہے کہ انٹی کرپشن مافیا کو اس وقت شدید خفت کا سامنا کرنا پڑا جب فاضل عدالت میں خود پراسیکیوشن نے مدعی محمد ایوب صابر کے موبائل کی DVD جس میں موجود کالز اور ایس ایم ایس ڈیٹا وغیرہ شامل تھاپیش کی جو فرانزک سائنس لیباٹری ہوم ڈیپارٹمنٹ پنجاب لاہور نے پولیس کو بھجوائی تھی جس میں اینٹی کرپشن آفیسران کے تمام پو ل کھل گئے شہری نے چیئرمین نیب سے فوری تحقیقات کا مطالبہ کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »