fbpx

ایکسین بننے کا شوق،شہباز کی پرواز،10کروڑ روپے کے فنڈز برباد،

ایکسین بننے کا شوق،شہباز کی پرواز،10کروڑ روپے کے فنڈز برباد،پروونشل ہائی وے رحیم یارخان کے ایگزیکٹو انجینئر کی آشیر باد، پروونشل ہائی وے لیاقت پورکے DDOشہباز کی کارستانیاں، 10کروڑکے منصوبے ترنڈہ گرگیج روڈ تا بستی شمیم خان گبول نمبردار، جن پور تا الہ آباد میٹل سٹرک میں ناقص مٹیریل کا استعمال،ٹھیکیدار محکمہ کی ملی بھگت سے پتھر کی بجائے ناقص پرانی اینٹوں کا استعمال کر نے لگا،ناقص میٹریل کی وجہ سے کروڑوں کا فنڈ ضائع ہونے کا خدشہ،پرانی اینٹوں کی روڑی تیار جبکہ انڈر سائز پتھر کا استعمال کرکے بیس بنا دی،مقامی لوکل مٹی بھی استعمال کی جارہی ہے،آفیسران کی جانب سے SDOشہباز کی ٹھیکیداروں کے ساتھ حصہ داری چل رہی ہے،ایکسین اورڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر پروونشل کو 5فیصد کمیشن ایڈوانس دے دیا گیا ہے،ایڈوانس بل بنانے کی تیاری مکمل ہو چکی ہے ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب اور کمشنر بہاول پور فوری کاروائی کریں مقامی شہری کا مطالبہ تفصیل کے مطابق مقامی شہری عبدالغفار، محمد افضل نے چیئرمین قومی احتساب بیورو نیب، وزیر اعلیٰ پنجاب،چیف سیکریٹری پنجاب،سیکریٹری C&Wپنجاب اور ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب کے نام تحریری درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ حکومت پنجاب او رسابق ممبر صوبائی اسمبلی مخدوم سید مسعود عالم ایم پی اے حلقہ285کی خصوصی گرانٹ سے کنسٹریکشن آف میٹل روڈ ظاہر پیر تا پٹھان یوسی گل محمد لنگاہ،ترنڈہ گرگیج روڈ تا بستی شمیم خان گبول نمبردار، جن پور تا الہ آباد،کنسٹریکشن آف میٹل روڈ بستی مرید خان وایا بستی حسین بخش کے لیے تقریباً10کروڑ روپے نئی میٹل روڈز کے لیے پروونشل ہائی وے لیاقت پور کو دس کروڑ روپے کے فنڈز فراہم کیے ٹھیکیداروں نے تحصیل لیاقت پور کے کرپٹ ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر پروونشل ہائی وے لیاقت پورشہباز کو حصہ داری دے دی جبکہ ایگزیکٹو انجینئر رحیم یار خان کو 5فیصد کمیشن دے کر اپنی مرضی مطابق روڈز تیارکرنا شروع کردیں پہلے سے نصب شدہ سولنگ کو اسٹیمیٹ سے ڈرا نہیں کرایا گیا بلکہ ٹھیکیدار نے تمام پرانی اینٹوں کی روڑی تیار کراکے روڈ کی بیس بنا دی اور پتھریلی ریتا کی بجائے مقامی لوکل مٹی اور مائنر کی ریت نکال کر اوپر ڈال دی جس طریقے سے روڈ تیار کی جارہی ہے ایک کروڑ روپے کی سیدھی کرپشن کی جائے گی

حکومت کو 3 کروڑ روپے کا ٹیکہ لگادیا ہے اور ٹھیکیداروں کو نوازنے کے لیے آفیسران نے ایڈوانس بل بنائے گئے ہیں شہریوں نے بتایا کہ محکمہ کی ملی بھگت سے ٹھیکیدار نے تمام سٹرک پر پتھر کی بجائے پرانی سڑک کی سائیڈوں سے نکالی گئی بوسیدہ انٹیوں اور ناقص روڑہ کا استعمال دھٹرلے سے شروع کیا ہوا ہے،اور سٹرک پر ناقص روڑے اور سیم زدہ مٹی کو ڈالا گیا ہے شہریوں نے ڈائریکٹر جنرل اینٹی کرپشن پنجاب اور کمشنر بہاول پور کو تحریری درخواستیں دیتے ہوئے فوری ٹیکنیکل ریڈ کے ذریعے کاروائی کا مطالبہ کیا ہے جبکہ SDOشہباز نے بتایا کہ تمام کام اسٹیمیٹ کے مطابق کیے گئے ہیں اسٹیمیٹ کے برعکس کوئی کام نہیں کیا گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close