fbpx
رحیم یارخانضلعی انتظامیہ

رحیم یارخان میں ادویات کی مصنوعی قلت,مہنگے داموں فروخت پر سخت کاروائی کا فیصلہ

رحیم یارخان میں ادویات کی مصنوعی قلت اور مہنگے داموں بیچنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کا فیصلہ
رحیم یار خان:ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے خلاف حکومت، ادارے، عوام اور تاجر برادری ایک پیج پر ہیں اور عوام کو اس موذی مرض سے محفوظ رکھنے کے لئے تمام سیکٹرز گراں قدر خدمات سر انجام دے رہے ہیں
جبکہ کورونا وائرس کے خلاف ڈاکٹرز و پیرا میڈیکس سٹاف کے ساتھ کیمسٹ ایسوسی ایشن بھی فرنٹ لائن پر اپنی خدمات سر انجام دے رہی ہے جسے فراموش نہیں کیا جا سکتا
تاہم ہمارے درمیان موجود خامیوں کو دور کرنے کے لئے بہتری کی گنجائش موجود ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلعی کیمسٹ ایسوسی ایشن سے ملاقات کے دوران کیا۔
ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ کیمسٹ ایسوسی ایشن کورونا کے خلاف جاری جنگ میں حکومت کی فرنٹ لائن میں شامل ہے
ہمیں اس جنگ میں عوام کو ہر ممکن سہولیات فراہم کرنا ہیں تاکہ اس موذی مرض میں مبتلا مریضوں کی صحت یابی کی کوششوں میں اپنا کردارادا کر سکیں۔
انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے متعلق تاحال دنیا بھر میں کوئی قابل عمل علاج یا ادویات دستیاب نہیں ، مختلف ادویات تجرباتی مراحل میں شامل ہیں اور ہر میڈیسن کا مریض کے مرض کے مطابق ردعمل ہے
تاہم عوام ایسی کسی بھی ادویات کا ڈاکٹرز کی جانب سے تجویز کے بغیر استعمال نہ کریں کیونکہ ڈاکٹرز بہتر جانتے ہیں کہ مریض کو کس اسٹیج پر کونسی ادویات تجویز کرنا ہیں اور کورونا کے علاج میں استعمال ہونے والی تمام ادویات حکومت کے پاس دستیاب ہے لہذا عوام محض افواہوں پر عمل کرتے ہوئے غیر ضروری ادویات کا استعمال اور ذخیر ہ نہ کریں۔
انہوں نے کہا کہ کیمسٹ ایسوسی ایشن اس قومی مہم میں حکومت اور اداروں کا ساتھ دے او رایسی کسی بھی ادویات کی بلیک مارکیٹنگ یا مصنوعی قلت میں ملوث عناصر کی حوصلہ شکنی کرتے ہوئے
ان کے خلاف کارروائی کےلئے اداروں کے شانہ بشانہ اپنی خدمات سر انجام دیں کیونکہ یہ ہماری قومی، سماجی اور مذہبی ذمہ داری ہے کہ غیر معمولی حالات میں ہم ناجائز منافع خوری اور مصنوعی قلت سے اجتناب کریں۔
انہوں نے کہا کہ کوئی بھی ادویات سائنسی لحاظ سے کورونا مرض کا قابل عمل علاج نہیں تمام ادویات ڈاکٹرز کی آراءسے استعمال کی جائیں۔
انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کو معلومات موصول ہوئی ہیں کہ بعض کیمسٹ ممکنہ طور پر کورونا کے علاج میں مددگار ادویات کی بلیک مارکیٹنگ میں ملوث ہیں جس پر صوبہ بھر میں سخت کارروائی عمل میں لائی جا رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ گذشتہ روز بھی حکومتی احکامات پر تمام اسسٹنٹ کمشنرز کو ہدایات جاری کی گئی تھی کہ وہ ایسے عناصر کے خلاف کارروائی عمل میں لائیں جس پر اسسٹنٹ کمشنرز نے کارروائیاں کی۔
ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ کیمسٹ ایسوسی ایشن کو ادویات کی سپلائی بہتراور کنٹرول ریٹ پر فراہم کرنے کے لئے اقدامات کئے جا رہے ہیں تاہم کیمسٹ ایسوسی ایشن ایسے ہول سیل ڈیلرز اور کمپنیوں کی نشاندہی کریں جو ان ہنگامی حالات میں ادویات کی مصنوعی قلت اور مہنگے داموں سپلائی میں ملوث ہیں ان کے خلاف بھی کارروائی عمل میں لائی جائے گی جبکہ کورونا کے علاج میں استعمال ہونے والی ادویات بغیر ڈاکٹری نسخہ کے فراہم نہ کریں اور بابت تمام میڈیکل سٹورز عوامی آگہی کے لئے بینرز/پینا فلیکس اپنے میڈیکل سٹورز کے باہر آویزاں کریں۔
اجلاس میں کیمسٹ ایسوسی ایشن کی جانب سے چوہدری صغیر احمد نے مکمل تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ کیمسٹ ایسوسی ایشن کنٹرول ریٹ پر ادویات فروخت کرنے میں حکومت اور اداروں کے ساتھ ہے تاہم ادویات کی سپلائی کے حوالہ سے مشکلات ہیں جس کا تدارک بھی ضروری ہے اور اس کے لئے کیمسٹ ایسوسی ایشن انتظامہ کے ساتھ اپنے مکمل تعاون کو یقینی بنائے گی۔

ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا ہے کہ ضلع میں سرکاری ہسپتالوںو مراکز صحت میں اعلیٰ نظم و نسق کو برقرار رکھنے کےلئے بھر پور اقدامات کئے جائیں اور کسی جگہ ادویات کی کمی یا سٹاف کی غیر حاضری کی شکایت سامنے نہیں آنی چاہیے۔
وہ ڈسٹرکٹ ریویو کمیٹی برائے ہیلتھ کے اجلاس کی بذریعہ ویڈیو لنک صدارت کر رہے تھے۔ویڈیو لنک اجلاس میں سی ای او ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا سمیت تمام ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرز، ایم ایس ٹی ایچ کیو ہسپتال، میڈیکل آفیسر دیہی مراکز صحت نے شرکت کی۔
ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ کورونا وائرس کے باعث موجودہ حالات میں ہیلتھ سٹاف پر بھاری ذمہ داریاں عائد ہوتی ہیں کہ وہ اپنی اور عملہ کی حفاظت کو یقینی بناتے ہوئے عوام کو معیاری ہیلتھ سروسز فراہم کریں۔
انہوں نے کہا کہ کورونا سے تحفظ کی ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرتے ہوئے مراکز صحت کے بارے میں طے شدہ حکومتی اہداف کو مکمل کرنے میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھیں جبکہ معیاری صفائی کو یقینی بنانے کے ساتھ ، واش رومز، انتظار گاہ، لائٹنگ اور ہسپتالوں میں شجرکاری کو بھی فروغ دیا جائے تاکہ علاج معالجہ کے لئے آنے والے شہریوں کو خوشگوار ماحول میسر آئے۔
انہوں نے سرکاری ہسپتالوں میں طبی مشینری کی ذمہ دارانہ دیکھ بھال اور ہمہ وقت فنکشنل رکھنے کی ہدایات بھی جاریں کی۔اجلاس میں سی ای ا وہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا نے ضلع میں فراہم کی جانے والی ہیلتھ سروسز بارے تفصیلی بریفنگ دی۔
شوگر ملز مالکان
شوگر ملز مالکان ویڈیو اجلاس
حکومت پنجاب کے احکامات پر ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے ضلع ہذا کی شوگر ملز مالکان کوہدایت کی ہے کہ وہ فوری طور پر اپنی شوگرملز کے گوداموں میں موجود فروخت شدہ چینی متعلقہ بروکرز/ہول سیل ڈیلرز کو اٹھانے کے اقدامات کریں۔حکومت پنجاب کے مشاہدہ میں آیا ہے کہ صوبہ بھر میں چینی کے بڑے ہول سیل ڈیلرز/بروکرز نے شوگر ملز سے بڑی تعداد میں چینی خرید کی ہے
مگر تاحال وہ چینی انہوں نے شوگر ملز کے گوداموں سے نہ اٹھائی ہے جس کے باعث صوبہ بھر میں چینی کی قلت کا خدشہ ہے جس کے تحت حکومت پنجاب نے صوبہ بھر کے تمام اضلاع میں ڈپٹی کمشنرز کو احکامات جاری کئے ہیں
 کہ وہ اپنے ضلع میں موجود شوگرملز کو فوری طور پر حکومتی ہدایات پر عملدرآمد کا پابند بنائیں بصورت دیگر شوگر ملز کی جانب سے فروخت شدہ چینی جو کہ شوگر ملز کے گوداموں میں موجود ہے
اسے پنجاب پریوینشن آرڈیننس 2002کی دفعہ2کے تحت بحق سرکار ضبط کر لیا جائے گا۔ڈپٹی کمشنر نے تمام تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز کو ہدایات جاری کی ہیں
کہ وہ اپنی تحصیلوں میں موجود شوگر ملز انتظامیہ سے رابطہ کرتے ہوئے انہیں حکومتی احکامات سے آگاہ کریں اور36گھنٹوں میں فروخت شدہ چینی متعلقہ ہول سیل ڈیلرز/بروکرز کو ترسیل یقینی بنائیں مقررہ وقت کے بعد اسسٹنٹ کمشنرز اپنی تحصیلوں میں موجود شوگر ملز کے گوداموں اور ریکارڈ کا معائنہ کریں گے اور فروخت شدہ چینی نہ اٹھانے کی صورت میں گوداموں میں موجود چینی کی بحق سرکار ضبط کر لیں گے۔

Tags

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close