واپڈا میں میں موجود کرپٹ افسران کیخلاف تحقیقات کی جائے

asim rasheed rahim yar khan news

رحیم یارخان :ایکسین آپریشنل عاصم رشید چوہدری ریلوے روڈ‘فیصل روڈ‘آٹو مارکیٹ‘پریس مارکیٹ‘گلستان پارک اور بوستان پارک کے گردونواح کے دکانداروں کے لئے درد سر بن گیا ۔ اپنے مخصوص واپڈا اہلکاروں کے ذریعے صارفین سے پیسے بٹورنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے ۔ ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ کسی بھی ٹرانسفارمر کی کوائل جل جانے کے بعد اس سے تانبے کی تار نکال کر مہنگے داموں فروخت کردی جاتی ہے اور ٹرانسفارمر کی کوائل کو سلور کی تار سے ریوائینڈ کروا کر محکمے کو ہزاروں روپے کا ٹیکہ لگا دیاجاتاہے ۔ رحیم یارخان کے مین ریلوے چوک کا ٹرانسفارمر95 دن گزرنے کے باوجود ٹھیک نہ ہوسکا ۔ ریلوے روڈ‘فیصل روڈ‘پریس مارکیٹ‘آٹومارکیٹ‘گلستان بوستان پارک کے گردونواح میں موجود دکاندار شدید پریشانی میں مبتلا ہوگئے ۔ ریلوے اسٹیشن کی جامع مسجد میں نمازپڑھنے کے لئے آنے والے نمازیوں کو بھی مشکلات کا سامنا وولٹج کم ہونے کی وجہ سے گرمی میں نماز پڑھنے پر مجبور۔ تفصیل کے مطابق 22 جنوری 2019 ء سے ریلوے چوک کے ٹرانسفارمر کی ایک کوائل جل گئی واپڈا اہلکاروں نے عارضی طورپر بجلی چالو کردی جس کی وجہ سے تھری فیزکنکشن والے صارفین تین ماہ سے بجلی کی سہولت سے محروم ہیں ۔ دکانداروں نے واپڈا آفس میں جا کر کمپلین درج کرائیں لیکن شروع دن سے اب تک صارفین کو ایک ہی جواب دیاجارہاہے کہ نئے ٹرانسفارملتان سے ایک دو دن تک آئیں گے تو نیاٹرانسفارمر رکھ دیاجائے ۔ تین ماہ گزرنے کے باوجود نہ ہی نیا ٹرانسفارمر آیا اور نہ ہی پرانے خراب ٹرانسفارمر کورپیئرکروایاگیا۔ صارفین واپڈا آفس کمپلین درج کروانے جاتے ہیں تو ان کو جواب دیاجاتاہے کہ کمپلین درج کرانے سے کچھ نہیں ہوگا آپ ایس ڈی او‘ایکسین یا ایس ای سے رابطہ کریں تو آپ کا مسئلہ حل ہوگا ۔ ایکسین واپڈا نے تین ماہ سے دکانداروں اور کوایک دودن تک نیا ٹرانسفارمر لگ جائے گا کا کہہ کر ٹرخا رکھا ہے ۔جبکہ دکانداروں کے کاروبار ٹھپ ہو کر رہ گئے اور صارفین ٹرانسفارمر کی تبدیلی کے لئے واپڈا آفس کے دھکے کھا کھا کر تھک گئے ۔ واضع رہے کہ ٹرانسفارمر خراب ہونے پر واپڈا اہلکاروں نے دکانداروں سے 30 ہزار روپے رشوت طلب کی اور کہا کہ پیسے اکٹھے کرکے دے دو تو تین گھنٹے میں ٹرانسفارمر ٹھیک ہو کر لگا دیں گے ۔ لیکن رقم نہ دینے پر دکانداروں کو تین ماہ سے خوار کیاجارہاہے ۔ واضع رہے کہ جبکہ ریلوے اسٹیشن کا ٹرانسفارمر بھی اسی طرح کوائل جل جانے سے خراب ہوا تو ایک ہی دن میں اسے مرمت کرکے لگا دیاگیا ۔لیکن ریلوے چوک کے مین ٹرانسفارمر کوپیسے نہ دینے پر نہ ٹھیک کروایاجارہاہے اور نہ ہی اس کو تبدیل کیاجارہاہے ۔ ریلوے روڈ پر واقع کاشف انوار پرنٹنگ پریس‘ اعظم سٹریٹ میں واقع یونس پرنٹنگ پریس‘ذکاء الدین پان شاپ ‘پنجاب ٹی سٹال ‘کیفے پیراڈائز ہوٹل‘ المدینہ ہوٹل ‘پارس ہوٹل‘ السعید انجینئرنگ ورکس‘آزاد انجینئرنگ ورکس‘غوری ڈینٹل کلینک‘ثوبیہ اقراء پرنٹنگ پریس کے مالکان اورریلوے اسٹیشن کی جامع مسجد کی انتظامیہ نے وزیراعظم پاکستان عمران خان‘وزیرا علی پنجاب عثمان بزدار‘چیف ایگزیکٹو میپکو ملتان‘چیف انجینئرمیپکو ملتان‘وفاقی وزیر بجلی وپانی‘وفاق محتسب ملتان سے اپیل کی ہے کہ واپڈا میں میں موجود کرپٹ افسران کیخلاف تحقیقات کی جائے اور ریلوے چوک کے ٹرانسفارمر کوتبدیل کرنے کے احکامات جاری کئے جائیں ۔

asim rasheed rahim yar khan news

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »