رحیم یارخان میں کورونا وائرس کے 198کیس سامنے آ گئے ، ڈی سی علی شہزاد

رحیم یار خان:ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی دوسری لہر کے دوران ملک بھر کی طرح ضلع رحیم یار خان میں بھی مقامی سطح پر کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے جو باعث تشویش ہے، عوام کو کسی صورت احتیاط کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا چاہیے اور اپنے سمیت خاندان کی حفاظت کے لئے کورونا سے بچاﺅ کی تمام حفاظتی تدابیر پر عمل ناگزیر ہے۔
یہ بات انہوں نے ضلع میں کورونا کی موجودہ صورتحال اور دستیاب طبی وسائل کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔
اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر، سی ای ا وہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا، ایم ایس شیخ زید ہسپتال ڈاکٹر آغا توحید سمیت دیگر متعلقہ افسران موجود تھے۔
ڈپٹی کمشنر نے ہدایت کی کہ شیخ زید ہسپتال سمیت تمام سرکاری ہسپتالوں میں کورونا کیسز کے بڑھتے ہوئے اضافہ کے پیش نظر طبی انتظامات مکمل رکھیں جائیں جبکہ ہسپتالوں میں آنے والے کورونا و دیگر نوعیت کے مریضوں کو طبی سہولیات فراہم کرنے والے ڈاکٹرز و طبی عملہ کی حفاظت پر کوئی سمجھوتا نہ کیا جائے۔
تمام ہسپتالوں میں ڈاکٹرز و طبی عملہ کے لئے حفاظتی کٹس وافر مقدار میں موجود اور انہیں فراہم کی جائیں۔انہوں نے کہا کہ جلد ضلع رحیم یار خان میں کورونا وائرس کے ٹیسٹ کرنے بی ایس ایل لیب فنکشنل ہو جائے گی اس میں مزید تاخیر ناقابل برداشت ہے۔انہوں نے کہا کہ شہری کورونا سے تحفظ کے لئے ہر صورت احتیاطی تدابیر پر عمل کرتے ہوئے پُر ہجوم جگہوں پر جانے سے گریز، ماسک کا استعمال اور بار بار ہاتھ لازمی دھوئیں۔انہوں نے کہا کہ ضلع میں کورونا کے متاثرہ مریضوں کو موجودہ دستیاب وسائل کے ساتھ تمام سرکاری ہسپتالوں میں ایس او پیز کے مطابق طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں اور ڈاکٹرز وطبی عملہ اپنی پیشہ ورانہ مہارت اور قومی ذمہ داری کے ساتھ خدمات سر انجام دے رہا ہے۔ڈپٹی کمشنر نے سی ای ا وہیلتھ ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا ور ایم ایس شیخ زیدہسپتال کو ہدایت کی کہ تمام ہسپتالوں میں حفاظتی کٹس اور آکسیجن وافر مقدار میں موجود ہونی چاہیے جبکہ سنٹرل آکسیجن سسٹم کے ساتھ اضافی آکسیجن سلینڈرز کا بھی مکمل ریکارڈ و مانیٹرنگ جاری رکھتے ہوئے آکسیجن کی مقدار کے سرٹیفکیٹس جمع کرائے جائیں۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ضلع میں موجودہ کورونا کے ایکٹو کیسز کی تعداد198ہے جبکہ دوسری لہر جو کہ1اکتوبر2020سے شروع ہوئی کہ دوران ضلع بھر میں450سے زائد کیس رپورٹ ہوئے ۔محکمہ ہیلتھ کی جانب سے بتایا گیا کہ شیخ زید ہسپتال میں کورونا مریضوں کے لئے مختص وارڈ میں50فیصد سے زائد جگہ دستیا ب ہے تاہم کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں بیڈز کی تعداد میں مزید اضافہ کیا جا سکتا ہے۔انہوںنے بتایا کہ ضلع بھر میں دوسری لہر کے دوران17جبکہ مجموعی طور پر84اموات رپورٹ ہوئی ہیں۔ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی اور شیخ زید ہسپتال انتظامیہ کی جانب سے بتایا گیا کہ ڈاکٹرز و طبی عملہ کے لئے حفاظتی کٹس وافر مقدار میں دستیاب ہیں جبکہ آکسیجن کی بھی کوئی کمی نہیں۔انہوں نے بتایا کہ شیخ زید ہسپتال میں بی ایس ایل لیب رواں ماہ میں فنکشنل کر دی جائے گی جس کے لئے عملہ کی تربیت مکمل کی جا چکی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »