رحیم یارخان میں 55سالہ شخص میں کورونا وائرس کا شبہ،خصوصی آئیسولیشن وارڈ منتقل

رحیم یارخان: ایران سے واپس آنے والے 55سالہ شخص میں کورونا وائرس کا شبہ گھر سے طبی امداد کیلئے شخ زید ہسپتال میں قائم کیے جانے والے خصوصی آئیسولیشن وارڈ منتقل کردیا گیا نمونہ جات لیبارٹری ٹیسٹ کیلئے اسلام آباد بھجوادیئے گئے55سالہ مشتبہ کورونا وائرس مریض کوپاک ایران بارڈر پر 6روز تک انتہائی نگہداشت میں بھی رکھا گیا


موضع بھاگ والی بستی قادر بخش کارہائشی55سالہ مرید عباس جوکہ 8فروری کو زیارات کیلئے ایران گیا تھا جسے واپس آنے پر پاک ایران بارڈر پر کورونا وائرس کے باعث 8روز انتہائی نگہداشت میں رکھے جانے کے بعد گھر بھجوادیا گیا تھا گزشتہ روز محکمہ صحت کی جانب سے تشکیل دی جانے والی خصوصی ٹیم مرید عباس کے گھرپہنچی اور کورونا وائرس میں مشتبہ ہونے پر شیخ زید ہسپتال میں قائم کیے جانے والے خصوصی آئیسولیشن وارڈ منتقل کرنے کے بعد خون کے نمونہ جات لیبارٹری ٹیسٹ کیلئے اسلام آباد بھجوادیئے گئے ہیں ذرائع کے مطابق مرید عباس کے خاندان کے دیگر افراد کی بھی سکریننگ کی جائے گی۔ اس سلسلہ میں ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ مرید عباس کے کورونا وائرس میں مبتلا ہونا یانہ ہونا قبل از وقت تاہم بھجوائے جانے والے خون کے نمونہ جات کی رپورٹ پر حقائق سامنے آسکیں گے اس دوران مرید عباس شیخ زید ہسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں ڈاکٹروں کی زیر نگرانی رہے گا۔

ترجمان شیخ زید ہسپتال ڈاکٹر الیاس  کا کہنا ہے کہ ضلع رحیم یار خان میں کورونا وائرس سے متاثرہ کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا

کوٹسمابہ کا رہائشی 55 سالہ مرید حسین 8 فروری کو ایران سے پاکستان آیا۔مرید حسین میں کورونا سے مشابہ کوئی علامات ظاہر نہیں ہوئی متاثرہ مریض میں کورونا وائرس کی علامات 12 دن تک ظاہر ہو جاتی ہیں ۔کورونا سے متعلق افواہیں نہ پھیلائیں جائیں محکمہ صحت مکمل الرٹ اور ایران سمیت دیگر متاثرہ ممالک سے آنے والے افراد کی سکریننگ کا عمل جاری ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »