ضلع میں 37ارب روپے کی لاگت سے647ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے

رحیم یارخان ڈپٹی کمشنر علی شہزاد کی سربراہی میں ضلع میں جاری ترقیاتی کاموں کی پیشرفت اور محکمہ مال کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے اجلاس منعقد ہوا۔
ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(فنانس اینڈ پلاننگ)محمد طیب، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر، ڈپٹی ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ چوہدری طالب حسین رندھاوا سمیت دیگر متعلقہ حکام نے شرکت کی،
ڈپٹی کمشنر کو ڈویلپمنٹ ونگ کی جانب سے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا کہ ضلع میں 37ارب روپے کی لاگت سے647ترقیاتی منصوبوں پر کام جاری ہے جس میں ہیلتھ، ایجوکیشن، روڈز، بلڈنگز، بجلی، سوئی گیس سمیت دیگر مفاد عامہ کے متعدد منصوبے شامل ہیں جبکہ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر نے محکمہ مال کے مختلف ونگز کی کارکردگی اور ریکوری اہداف بارے تفصیلی بریفنگ دی۔ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلاح عامہ کے منصوبوں سے متعلق حکومتی احکامات واضح ہیں ، عوامی فلاح بہبود کے منصوبوں میں کر پشن یا تاخیر کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی اس پر زیروٹالرنس پالیسی ہے لہذا تعمیراتی کاموں کی مانیٹر نگ سے وابستہ محکموں کے افسران ترقیاتی منصوبوں میں قواعد و ضوابط اور شفافیت کو یقینی بنائیں گے بصور ت دیگر متعلقہ افسر ان خود ذمہ دار ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ اب روائتی احکامات نہیں چلیں گے ناقص کام کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے گا حکومتی فنڈز عوام کی امانت ہیں جنہیں ان کی فلاح وبہبود اور بنیادی سہولیات کی فراہمی پر مکمل ایمانداری سے صرف کیا جائے گا۔انہوں نے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈویلپمنٹ کو تاخیر اور فنڈز کی عدم دستیابی کے شکار منصوبوں کی تفصیلات سے آگاہ کرنے کی ہدایات جاری کیں۔انہوں نے کہا کہ تمام ترقیاتی منصوبوں کو مقررہ مدت میں مکمل کیا جائے گا اور فنڈز کی عدم دستیابی سمیت دیگر مسائل کے باعث تاخیر کے شکار منصوبوں کو مکمل کرنے کے لئے متعلقہ حکام سے بات کی جائے گی۔ڈپٹی کمشنر نے ریونیو سے متعلقہ اجلاس میں ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو سب سے زیادہ زمینوں سے متعلق شکایات ہیں لہذا محکمہ مال اپنی کارکردگی میں بہتری لائیں ، دستیاب وسائل اور افرادی قوت سے ہم نے عوام کو بہترین سروسز فراہم کرنی ہیں، ادارو ں میں کرپشن کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی اور عوام کے جائز کاموں میں رکاوٹ ڈالنے والو ں سے سختی سے نمٹا جائے گا۔انہوں نے ریکوری اہداف کو مزید بہتر کرنے کے بھی احکامات جاری کئے۔
ڈپٹی کمشنر علی شہزاد کو ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کی بریفنگ، مراکز صحت، طبی سہولیات کی فراہمی، ڈینگی کی صورت حال اورانسداد پولیو مہم کے بارے میں محکمانہ اقدامات بارے آگاہ کیا گیا۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(فنانس اینڈ پلاننگ)محمد طیب، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر،سی ای ا وڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا، ڈی ایچ اوز ڈاکٹر حسن خان، ڈاکٹر غضنفر شفیق سمیت تحصیلوں کے ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسرز اور ایم ایس ٹی ایچ کیو ہسپتال بھی اجلاس میں شریک تھے۔ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا کہ اداروں میں سر وسز ڈلیوری کو بہتر بنانا موجودہ حکومت کی اولین ترجیح ہے ، ہیلتھ اتھارٹی کی کارکردگی باعث اطمینان تاہم اس میں مزید بہتری کی گنجائش موجود ہے۔انہوں نے کہا کہ اداروں پر عوامی اعتماد کو بحال کرنے کے لئے سخت محنت کی ضرورت ہے لہذا تمام افسران اپنی ذمہ داریاں مزید احسن انداز سے انجام دیں، سرکاری ہسپتالوں کے معیار میں بہتری لائی جائے اور کوئی بھی حکومت کی جانب سے فراہم کردہ علاج معالجہ کی سہولیات سے محروم نہ رہے۔انہوں نے کسی بھی ہسپتال میں طبی سہولیات کے حصو ل کےلئے آنے والے مریضوں کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے اور ڈاکٹرز، پیرا میڈیکل سٹاف، ادویات سمیت دیگر جرحی آلات کی موجودگی یقینی بنائی جائے۔انہوں نے آمدہ انسداد پولیو مہم میں ٹیموں کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے اور تمام یونین کونسلز میں 100فیصد اہداف کا حصو ل یقینی بنانے کی ہدایت کی۔قبل ازیں سی ای او ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ضلع میں3ٹی ایچ کیو ہسپتال،19رورل ہیلتھ سنٹرز .،104بنیادی مراکز صحت اور56رورل ڈسپنسریاں موجود ہیں جبکہ ضلعی ہیڈ کواٹر پر954بیڈز پر مشتمل شیخ زید ہسپتال ہیلتھ سروسز فراہم کر رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ آمدہ پولیو مہم میں9لاکھ55ہزار پانچ سال سے کم عمر بچوں کو پولیو سے بچاﺅ کی حفاظتی ویکسین کے قطرے پلائے جائیں گے۔جبکہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت الطاف آئی ہسپتال خانپور کی تعمیر و مرمت اور دیہی مراکز صحت میانوالی قریشیاں کی اپ گریڈیشن شامل ہے۔دریں اثناءڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے ڈسٹرکٹ ایمرجنسی رسپانس کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کے اجلاس کی صدارت کی جس میں بتایا گیا کہ ضلع میں ڈینگی کا کوئی کیس رپورٹ نہیں ہوا اور ضلع رحیم یار خان ڈینگی فری ضلع ہے جبکہ دیگر اضلاع سے ڈینگی کے متاثرہ مریض رحیم یار خان لائے گئے جو الحمد اللہ صحت یاب ہو کر اپنے گھروں کو روانہ ہوئے۔
ڈپٹی کمشنر علی شہزاد کی سربراہی میںڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی کااجلاس۔یڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(فنانس اینڈ پلاننگ)محمد طیب، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر، سی ای او ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی رانا محمد اظہر، ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرز ملک مختار حسین، چوہدری محمد اکبر سمیت دیگر کی شرکت۔ڈپٹی کمشنر نے ایجوکیشن اتھارٹی کے تعارفی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ امتحانی نتائج حوصلہ افزاءنہیں اس میں مزید بہتری لانے کے لئے عملی اقدامات کر نے ہوں گے،حکومت شعبہ تعلیم پر خصوصی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے اور اس ضمن میں وسیع پیمانے پر وسائل فراہم کئے جا رہے ہیں اب محکمہ کو نتائج دینا ہوں گے ، بصورت دیگر متعلقہ افسران ذمہ دار ہوں گے۔انہوں نے کہا کہ نئے جذبے اور عزم کے تحت ایجوکیشن افسران کام کریں بہتر کارکردگی پر حوصلہ افزائی جبکہ ناقص پر کارروائی ہو گی۔اجلاس میں بریفنگ دیتے ہوئے ڈپٹی کمشنر کو بتایا گیا کہ ضلع میں 2ہزار778سرکاری سکول ، 7سپیشل ایجوکیشن سکول موجو دہیں جبکہ انصاف پروگرام کے تحت 41سکولوں کو پرائمری سے مڈل اور مڈل سے ہائی سکول میں منتقل کیا گیا ہے جس سے10ہزار بچوں کو حصول تعلیم کے مواقع حاصل ہوئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ ایجوکیشن اتھارٹی میں18ہزار528ملازمین کام کر رہے ہیں جبکہ مختلف کیڈر کی اسامیاں خالی ہیں۔ڈپٹی کمشنر نے خالی اسامیوں اور بنیادی سہولیات سے محروم سکولوں کا ڈیٹا فراہم کرنے کے احکامات جار ی کئے۔
 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »