ڈی ڈی او زنانہ کا سرکاری وسائل کابے دریغ استعمال

رحیم یارخان ڈی ڈی اوزنانہ کھڑی سرکاری گاڑی کی مرمت کا47ہزار اور1لاکھ12ہزار900روپے کے بل وصول کرنے کے باوجودپرائیویٹ گاڑی استعمال کرنے لگی‘
سرکاری وسائل کابے دریغ استعمال‘ سرکاری گاڑی شاپربنددفترمیں موجود‘ سرکاری وسائل پرائیویٹ گاڑی پرلگائے جانے لگے‘ عوامی سماجی حلقوں میں تشویش کی لہر۔
تفصیل کے مطابق یہ گاڑی کے اوپر شاپر کیوں چڑھا ہے؟ڈی پی آئی ایلیمنٹری کا دوران انکوائری لیاقت پور میں سوال،یہ گاڑی تو ٹھیک ہے ڈپٹی آفس زنانہ کے اہلکاروں کا جواب مگر تین ماہ سے زائد گزرنے کے باوجود گاڑی پھر بھی بند،ڈپٹی زنانہ بغیر کسی اجازت کے کئی ماہ سے ذاتی گاڑی استعمال کرنے لگی،تفصیل کے مطابق ڈپٹی آفس زنانہ لیاقت پور میں موجود سرکاری گاڑی کو کچھ عرصے سے شاپر چڑھا کرکھڑا کردیا گیا تھا،
کچھ ماہ قبل ڈی پی آئی ایلیمنٹری لاہور ایک انکوائری کے سلسلے میں لیاقت پور میں آئے تو آفس میں موجود شاپر چڑھی گاڑی کا بھی معائنہ کیا تو یہاں موجود اہلکاروں نے انہیں بتایا کہ یہ گاڑی تو بالکل ٹھیک ہے بعدازاں انہوں نے اپنے ڈرائیور کے ذریعے اسے چیک بھی کرایا تو یہ گاڑی بالکل ٹھیک نکلی لیکن گاڑی کی درستگی کے باوجود موجودہ ڈپٹی ایجوکیشن آفیسر زنانہ آسیہ تسلیم اسے استعمال کرنے کے بجائے اپنی ذاتی گاڑی استعمال کررہی ہیں جبکہ پیٹرول سرکار کے کھاتے سے ڈلواتی ہیں مگر سرکاری قوانین کے مطابق وہ ایسا نہیں کرسکتیں،عوامی سماجی حلقوں نے ڈپٹی کمشنرعلی شہزاداورسی ای او ایجوکیشن رانا محمداظہرخان سے ایکشن لینے کا مطالبہ کردیا ہے‘ رابطہ کرنے پرآسیہ تسلیم نے مؤقف دینے سے انکار کردیا۔
 
 
Tags
Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close