انسداد ڈینگی حکومت کی اہم ترین ترجیح ہے

رحیم یار خان( )ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل نے کہا ہے کہ انسداد ڈینگی حکومت کی اہم ترین ترجیح ہے، وزیر اعلیٰ پنجاب سمیت صوبائی کابینہ اور تمام حکومتی ادارے اس موذی مرض کے خاتمے اور اس کے پھیلاﺅ کو ہر صورت روکنے کے لئے ممکنہ حد تک تمام اقدامات کو یقینی بنا رہے ہیں،
مرض سے بچاﺅ کے لئے احتیاطی تدابیر اور کمیونٹی کی شراکت اہم ہے، اس قومی فریضے کو سر انجام دینے کے لئے بنیادی ذمہ داری محکمہ صحت اور تمام متعلقہ اداروں کی ہے جس میں کوتاہی برتنے والوں سے سختی سے نمٹا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ایمرجنسی رسپانس کمیٹی برائے انسداد ڈینگی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر، سی ای او ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا، سی ای او ایجوکیشن چوہدری محمد اکبر، اسسٹنٹ کمشنر(ایچ آر)ریاست علی، ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ریسکیو1122ڈاکٹر عبدالستار،ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت راﺅ اشفاق احمد سمیت فشریز، لوکل گورنمنٹ، کالجز، چیف افسران میونسپل کمیٹیز و ضلع کونسل اور دیگر اداروں کے سربراہان موجود تھے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ ضلع میں بیرون اضلاع سے متاثرہ ہو کر آنے والے ڈینگی کے مریضوں کی ویری فکیشن کرائی جائے۔انہوں نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)کو ہدایت کی کہ وہ ریونیو سٹاف کے مدد سے ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی سفری دستاویزات اور اس ضلع میں رہائش کا دورانیہ چیک کرائیںجبکہ جس تحصیل یا علاقہ میں ڈینگی سے متاثرہ مریضوں نے قیام کیا ہے اس تمام علاقہ کی سرویلنس کی جائے۔انہوں نے کہا کہ ضلع کی کوئی یونین کونسل محکمہ صحت یا دیگر اداروں کی سرویلنس سے اوجھل نہ رہے اگر کسی یونین کونسل میں افرادی قوت کے مسائل ہیں تو دیگر محکموں سے ملازمین کو تربیت فراہم کرکے ان یونین کونسل میں تعینات کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ فیلڈ ٹیموں کی مسلسل مانیٹرنگ کی جائے ، تمام تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز اور ریونیو افسران بھی انسداد ڈینگی سرویلنس پر مامور فیلڈ ٹیمو ں کی روزانہ مانیٹرنگ کریں۔انہوں نے ہدایت کی کہ فیلڈ ٹیمیں تمام سرکاری رہائش گاہوں کو بھی چیک کریں جبکہ ضلعی افسران اپنے دفاتر کو چیک کرکے تحریری طور پر آگاہ کریں کہ وہاں ایسا کوئی مقام نہیں جہاں لاروا کی افزائش ممکن ہو سکے۔انہوں نے محکمہ لائیو سٹاک کو کیٹل مارکیٹ میں ڈینگی سے بچاﺅ بارے اقدامات کا ٹاسک تفویض کیا جبکہ محکمہ صحت کو دارلامان، چائلڈ پروٹیکشن بیورو، ڈسٹرکٹ جیل سمیت دیگر مقامات کی سرویلنس کے احکامات جاری کئے۔انہوں نے ہدایت کی کہ تحصیل سطح پر ہاٹ سپاٹ کا از سر نوجائزہ لیا جائے اور جہاں بھی لاروا کی افزائش ممکن ہے اسے سرویلنس میں رکھا جائے جبکہ تحصیلوں میں نجی ہسپتالوں سے بھی رابطہ رکھاجائے کہ اگر ادھر کوئی ڈینگی سے متاثر ہ مریض رجو ع کرتا ہے تو اس کی فوری رپورٹ محکمہ ہیلتھ کو فراہم کریں۔انہوں نے کہا کہ ان ڈور سرویلنس پر معمور لیڈی ہیلتھ ورکرز حکومتی ہدایات کے مطابق نہ صرف گھروں کو چیک کریں بلکہ انہیں مکمل آگہی فراہم کریں اور دیگر مہمات سے متعلق بھی ڈیٹا اکھٹا کریں۔ڈپٹی کمشنر نے محکمہ صحت کو ہدایت کی کہ ہمارا ضلع ڈینگی فری ہے اور یہ سب محکمہ صحت سمیت تمام تعاون کرنے والے اداروں کی کاوشوں کا نتیجہ ہے تاہم سرویلنس ٹیمیں ڈینگی کے علاوہ ملیریا یا دیگر بیماریوں کا باعث بننے والے مچھروں کے لاروا کے انسداد کو بھی یقینی بنائیں۔سی ای او ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ شیخ زید ہسپتال سمیت تمام سرکاری ہسپتالوں میں انسداد ڈینگی کے حوالہ سے خصوصی کاﺅنٹرز بنا دیئے گئے ہیں جبکہ سرکاری ہسپتالوں میں تربیت یافتہ سٹاف اور ڈینگی سے متاثر مریضوں کے لئے خصوصی وارڈز بھی فنکشنل کر دیئے گئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ تاہم ضلع رحیم یار خان ڈینگی فری ہے اور کسی بھی مقام پر ڈینگی لاروا کی تصدیق نہیں ہوئی جبکہ بیرون اضلاع سے متاثر ہوکر آنے والے ڈینگی کے مریضوں کو علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔
رحیم یار خان ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل نے کہا ہے کہ انسداد ڈینگی مہم ایک قومی فریضہ ہے اور اس سے وابستہ محکموں کے افسران و ملازمین اسے قومی جذبے کے ساتھ ادا کریں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ضلع بھر کے مانیٹرنگ اسسٹنٹ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ مانیٹرنگ اسسٹنٹ سکولوں کی مانیٹرنگ کے ساتھ ساتھ ان اداروں میں انسداد ڈینگی کے لئے کئے جانے والے حفاظتی اقدامات کو بھی بروقت ر پورٹ کریں۔انہوں نے ہدایت کی کہ ہر مانیٹرنگ اسسٹنٹ اپنے مطولبہ اہداف ہر صورت پورا کرے خاص طور پر ڈینگی سے متعلقہ ڈیش بورڈ پر اپنی سرگرمیاں روزانہ کی بنیاد پر اپ لوڈ کی جائیں اور کسی بھی سکول میں غفلت کا مظاہرہ محسوس کرنے پر رپورٹ کرے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے ضلع کو ڈینگی فری اور تعلیمی رینکنگ میں ضلع کے ٹاپ اضلاع کی فہرست میں شامل کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ پیشہ ورانہ امور میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے مانیٹرنگ اسسٹنٹ کی حوصلہ افزائی جبکہ ناقص کارکردگی پر سرزنش کی جائے گی ۔انہوں نے کہا کہ مانیٹرنگ سٹاف اپنی ذمہ داریاں احسن انداز سے سر انجام دے میں براہ راست مانیٹرنگ سٹاف کی کارکردگی کا انفرادی طور پر جائزہ لیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی مانیٹرنگ اسسٹنٹ کو فرائض کی ادائیگی میں پریشانی کا سامنا ہے تو وہ اسسٹنٹ کمشنر(ایچ آر )ریاست علی کو آگاہ کرے جبکہ میں خود بھی ہر مہینہ اجلاس کی صدارت کرکے مانیٹرنگ سٹاف کی کارکردگی اور مسائل کا جائزہ لوں گا۔
رحیم یار خان ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر نے کہا ہے کہ بروقت کئے جانے والے اقدامات بڑے حادثات سے بچاﺅ میں اہم کردار ادا کرتے ہیں اور یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ کسی بھی ممکنہ حادثہ جو انسانی دسترس میں ہو اسے کنٹرول میں رکھنے کے لئے بروقت حفاظتی اقدامات کئے جائیں تاکہ قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع کو بچایا جا سکے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ڈیزاسٹرمنیجمنٹ اتھارٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ریسکیو1122ڈاکٹر عبدالستار، اسسٹنٹ کمشنر(ایچ آر)ریاست علی، ڈی او سول ڈیفنس سمیت میونسپل کمیٹیز و ضلع کونسل کے چیف افسران اور فاطمہ فرٹیلائرز و فوجی فرٹیلائزر کے نمائندگان موجود تھے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر (ریونیو) نے کہا کہ شہریوں اور مختلف صنعتی یونٹس میں کام کرنے والے افراد کو محفوظ ماحول فراہم کرنا اس فورم کی ذمہ داری ہے جس کے لئے متعلقہ افسران احسن خدمات سر انجام دے رہے ہیں جبکہ ریسکیو اینڈ ریلیف سرگرمیوں میں شمولیت کرنے والے محکموں ریسکیو1122کو مزید سہولیات و ریسکیوآلات فراہم کرنے کے لئے بھی اقدامات کئے جائیں گے۔قبل ازیں ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ریسکیو1122ڈاکٹر عبدالستار نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ریسکیو1122دیگر امدادی سرگرمیوں میں حصہ لینے والے اداروں کے ہمراہ ضلع میں موجود سرکاری و نجی صنعتی یونٹس ، اہم پبلک مقامات پر کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے اوراداروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے تسلسل کے ساتھ موک ایکسرسائز کا انعقاد کراتا ہے تاکہ عوام میں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کی صلاحیت اور اداروں کی کارکردگی کا جائزہ لیا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ 19اکتوبر2019کو فاطمہ فرٹیلائزر میں ایمونیا گیس کے اخراج کی صورت میں حفاظتی اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے فل ڈریس موک ایکسر سائز کی جائے گی جبکہ اس سے قبل 17اکتوبر کو اداروں کی کارکردگی اور تربیت کے لئے بھی موک ایکسرسائز کا اہتمام کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اس فل ڈریس ایکسر سائز کا مقصد حفاظتی اقدامات اور اداروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے سمیت مقامی آبادی اور فیکٹری میں کام کرنے والے ملازمین کو حفاظتی زون میں پہنچانے کا عملی مظاہرہ کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اس کے لئے تمام متعلقہ اداروں کو آگاہ کر دیا گیا ہے اور مقامی آبادی سمیت میڈیا کو بھی بریفنگ دی جائے گی تاکہ کسی قسم کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔علاوہ ازیں
 انہوں نے ریسکیو1122کے ضلع کی حدود میں مختلف مقامات پر نئے اسٹیشن کے قیام اور پرانے اسٹیشن کی اپ گریڈیشن سے متعلق بھی تفصیلی بریفنگ دی۔
رحیم یار خان سیکرٹری ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی ریاست علی نے ضلع کی حدود میں قائم جنرل بس اسٹینڈز میں انسداد ڈینگی کے حوالہ سے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے تمام میونسپل کمیٹیز کے چیف افسران سے کہا کہ وہ بس اسٹینڈز پر صفائی خصوصاً پانی کے نکاس کو بروقت یقینی بنانے کے لئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھائیں ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ ٹرانسپورٹ حکومت پنجاب کی جانب سے ہدایات ہیں کہ ریجنل ٹرانسپورٹ اتھارٹی مقامی میونسپل کمیٹیز کے چیف افسران کے ساتھ مل کو بس اسٹینڈز پر ڈینگی فری ماحول کو یقینی بنائے اور اس سلسلہ میں وہ خود تمام بس اسٹینڈز کے وزٹ کریں۔
 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close