صدر بار اور جنرل سیکرٹری نے ڈسٹرکٹ بار کو اپنی ذاتی جاگیر بنا لیا ہے بشارت ہندل

رحیم یارخان سابق جنرل سیکرٹری ڈسٹرکٹ بار بشارت ہندل ایڈووکیٹ سابق ممبر پنجاب بار کونسل ایم جی ربانی ‘سابق صدر فاروق ورند‘ معروف قانون دان عامر ندیم ایڈووکیٹ کے ہمراہ بار روم میں پریس کانفرنس ‘پریس کانفرنس صدر بار حسان مصطفی ‘جنرل سیکرٹری عمران اشرف ایڈووکیٹس کے خلاف کی گئی پریس کانفرنس میں ہشارت ہندل ایڈووکیٹ کا کہنا تھا صدر بار اور جنرل سیکرٹری نے ڈسٹرکٹ بار کو اپنی ذاتی جاگیر بنا لیا ہے بشارت ہندل ایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ پاکستان بار کونسل نے رحیم یارخان بار کی قرار داد مورخہ 10-10-19کو معطل کرتے ہوئے مجھے بحال کردیا اور غیر قانونی طریقہ سے جنرل کونسل کا اجلاس کرنے پر صدر بار اور جنرل سیکرٹری طلب کرلیا سابق ممبر پنجاب بار کونسل ایم جی ربانی نے بتایا کہ معزز ممبر بشارت ہندل کو جنرل کونسل کا غیر قانونی طریقہ سے اجلاس بلا کر ڈس ممبر کیا جس کی ہم بھر پور مذمت کرتے ہیں جوکہ بہت افسوسناک عمل ہے صدر بار اور جنرل سیکرٹری یکرفہ کاروائی کرتے ہوئے بشارت ہندل کو ڈس ممبر کر بہت زیادتی کی ہے ہمیں بولنے کا موقع تک نہیں دیا گیا

 

سابق صدر ڈسٹرکٹ بار فاروق ورند نے صدر بار اور جنرل سیکرٹری کے فیصلہ کی بھر پور مذمت کرتے ہوئے میڈیا کو بتایا کہ پاکستان بار کونسل ‘پنجاب بار کونسل‘ چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ ڈسٹرکٹ بار میں ہونیوالے معاملات کا فوری نوٹس لیں فاروق ورند نے ڈسٹرکٹ بار کی صورتحال دیکھتے ہوئے کہا کہ صدر ڈسٹرکٹ بار اپنے فرائض سرانجام دینے میں مکمل طور پر ناکام ہوچکے ہیں انہوں نے صدر بار حسان مصطفی سے فوری استعفی کا مطالبہ کیا ہے کہ سید عطرت شاہ ایڈووکیٹ نے میڈیا کو بتایا کہ ڈسٹرکٹ بار میں سب کی عزت ایک برابر ہونی چاہئے کسی کہ حق حاصل نہیں کہ وہ چھوٹے بڑے ممبر سے بدتمیزی کرے سید عطرت شاہ ایڈووکیٹ نے بتایا کہ جنرل کونسل کا غیر قانونی اجلاس کرنے پر صدر بار کو اتنا کہا گیا کہ بشارت ہندل ایڈووکیٹ کو بھی بولنے کا موقع دیا جائے۔ ایک سوال کے جواب میں سابق جنرل سیکرٹری بشارت ہندل ایڈووکیٹ نے کہا کہ عدالت میں آنے والے سائلین کو تشدد کا نشانہ بنانا کسی وکلاء کو بھی حق نہیں ہے وکلاء عدالت میں آنے والے سائلین پر تشدد تو کیا بدتمیزی بھی نہیں کرسکتے ان کا کہنا تھا کہ پنجاب بار کونسل کی جانب سے حکم نامہ بھی جاری کیا گیا ہے جس میں واضع طور پر لکھا ہے کہ کسی بھی وکلاء اگر سائلین پر تشدد یا بدتمیزی کی تو اس کے خلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی آخر میں بشارت ہندل ایڈووکیٹ نے بتایا کہ پریس کانفرنس کے خوف سے دو گھنٹے قبل صدر بار اور جنرل سیکرٹری کی جانب سے بار روم کے آڈیٹوریم کو تالے لگا دیئے گئے پریس کانفرنس میں سابق صدور بار ‘ میاں عبدالسمیع‘ سہیل چاچڑ‘ ملک دوست محمد اعوان‘ رانا نوید‘ چوہدری خالد ‘طیب چوہدری سمیت وکلاء کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close