یوم استحصال : رحیم یارخان میں 1 منٹ کے لئے ٹریفک کو روک دیا جائے گا ، ڈی سی

رحیم یار خان:ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا ہے کہ 5اگست کو پاکستانی قوم کشمیریوں کے ساتھ اظہار یکجہتی اور کشمیر میں بھارتی فوج کے نہتے کشمیریوں پر ظلم و ستم ، کشمیر کی آئینی حیثیت میں ردوبدل اور بدترین فوجی محاصرے کے ایک سال مکمل ہونے پر ”یوم استحصال منائے گی۔

اس سلسلہ میں کشمیروں سے اظہار یکجہتی کے لئے مرکزی واک ڈپٹی کمشنر آفس سے نکالی جائے گی جس میں ارکان پارلیمنٹ، سرکاری محکموں کے افسران و عملہ، ٹائیگر فورس رضاکاران، سول سوسائٹی، وکلائ، ڈاکٹرز، تاجر تنظیمیں ودیگر شہری کورونا کے خلاف حکومت کی جانب سے جاری حفاظتی ایس او پیز پر مکمل عملدرآمد کرتے ہوئے شرکت کریں گے۔

یہ بات انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لئے 5اگست کو ”یوم استحصال“ کی تیاریوں کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔

اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر، اسسٹنٹ کمشنر چوہدری اعتزاز انجم، چیف آفیسر میونسپل کارپوریشن عظمت قدیر گورائیہ سمیت دیگر متعلقہ افسران موجو دتھے۔

ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ پانچ اگست کو صبح 10بجے سائرن بجاکر 1منٹ کی خاموشی اختیار کی جائے گی اور ہر قسم کی ٹریفک 1منٹ کے لئے روک دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ کشمیروں سے اظہار یکجہتی کے لئے ”یوم استحصال“ کے موقع پر کورونا ایس اوپیز پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے گا اور تمام شرکاءماسک اور مناسب فاصلہ کے ساتھ ریلی میں شریک ہوں گے۔

انہوں نے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر کو ہدایت کی کہ ریلی کے انعقاد کے حوالہ سے تمام تر انتظامات مکمل کئے جائیں اور سیکورٹی کا فول پروف انتظامات یقینی بنایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ ریلی میں ریسکیو1122، سول ڈیفنس اور پولیس جوان اور کورونا ٹائیگر فورس کے رضاکاران اپنے فرائض سر انجام دیں گے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close