فیس بک پر شر انگیز، غیر اخلاقی الفاظ پر کاروائی

رحیم یار خان :ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل نے کہا ہے کہ پاکستان میں رہنے والے اقلیتی برادری ہمارے لئے قابل احترام ہیں ان کے مسائل سے بخوبی آگاہ اور ان کے حل کے لئے اقدامات ترجیحات میں شامل ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے نامزد ضلعی ممبر انسانی حقوق و اقلیتی امور شمیل مرزا سے ملاقات کے موقع پر کیا۔اس موقع پر عاصم غنی اور سلمان چوہدری بھی موجود تھے۔ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ ضلع میں ڈسٹرکٹ جیل، دارالامان، چائلڈ پروٹیکشن بیورو سمیت دیگر اہم مقامات پر انسانی حقوق کے حوالہ سے حکومت گراں قدر خدمات سر انجام دے رہی ہے جبکہ ضلعی انتظامیہ بھی حکومتی ہدایات پر عملدرآمد کے ساتھ ساتھ اپنے دستیا ب وسائل سے بھی لوگوں کے لئے آسانیاں پیدا کرنے کے اقدامات کر رہی ہے۔ممبر انسانی حقوق واقلیتی امور شمیل مرزا نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف محروم طبقات کی نمائندہ جماعت ہے او روزیر اعظم پاکستان عمران خان کا ویژن ہے کہ پاکستان میں رہنے والے ہر شہری کو برابری کی سطح پر حقوق و سہولیات میسر آئیں جس پر عملدرآمد کے لئے انتظامی محکموں کے ساتھ ساتھ پاکستان تحریک انصاف کے کارکن بھی مکمل متحرک اور عملی اقدامات کر رہے ہیں۔انہوں نے ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل کی سربراہی میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے عوام کو فوری انصاف سمیت دیگر مسائل کے خاتمے کے لئے کئے جانے والے اقدامات کو سراہا۔
رحیم یار خان:ڈسٹرکٹ ایمر جنسی رسپانس کمیٹی کا اجلاس ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)ڈاکٹر جہانزیب حسین لابر کی زیر صدارت ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے انسداد ڈینگی سے متعلق آگہی مہم کو مزید تیز کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ قبرستانوں، پارکوں، نرسریوں، تالابوں ِ ٹائر شاپس سمیت نجی و سرکاری ادارے اور رہائش گاہوں پر خصوصی توجہ مرکوز رکھیں۔موجودہ سیزن میں ڈینگی کے خلاف کارروائیوں میں نرمی نہیں ہونی چاہیے اور متعلقہ محکمے احساس ذمہ داری ے ڈینگی لاروا کا انسداد یقینی بنائیں۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو)نے انسداد ڈینگی کے سلسلے میں محکموں کی کارکردگی کا جائزہ لیتے ہوئے واضح کیا کہ ہاٹ سپاٹس کی سرویلنس اور لاروے کے صفایا میں غفلت نہیں ہونی چاہیے کیونکہ موجودہ بارشوں کے موشم میں ڈینگی لاروا کے خدشات موجو دہیں لہذا اینٹی ڈینگی سٹاف کی نظر سے کوئی جگہ اوجھل نہ ہو۔انہوں نے اینڈرائڈ موبائل فونز کے ذریعے روزانہ کی کاروائی کو اپ لوڈ کرنے کی تاکید کی اور کہا کہ اس ضمن میں ناقص کارکردگی پر متعلقہ محکمے کا سربراہ جوابدہ ہو گا۔انہوں نے اسسٹنٹ کمشنرز کو بھی ہدایت کی کہ وہ ہر ہفتہ اپنی تحصیلوں میں تحصیل ایمرجنسی رسپانس کمیٹی کا اجلاس منعقد کرکے اینٹی ڈینگی اقدامات کا باریک بینی سے جائزہ لیں اور نچلی سطح پر متعلقہ محکموں کو متحرک رکھیں۔اجلاس میں ڈی ایچ او ڈاکٹر حسن خان، ڈاکٹر غضنفر شفیق، ڈاکٹر عمر، سی ای ا وایجوکیشن اتھارٹی، محکمہ زراعت، لائیو سٹاک، فشریز، سول ڈیفنس، ماحولیات، سوشل ویلفیئر سمیت دیگر تعاون کرنے والے اداروں کے افسران ونمائندگان موجود تھے۔اجلاس میں بتایا گیا کہ 29جولائی 2019سے 3اگست تک محکمہ ہیلتھ سمیت دیگر محکموں نے 154اینڈرائیڈ موبائل فونز کے ذریعے7ہزار879سرگرمیاں اپ لوڈ کی گئیں۔
ڈسٹرکٹ جیل انتظامیہ کی جانب سے کہا گہا ہے کہ چند ملازمین نے سوشل میڈیا(فیس بک) پر شر انگیز، غیر اخلاقی الفاظ اور انتہائی غلیظ ذہنیت کا استعمال کرتے ہوئے محکمہ ہذا کے افسران پر انتہائی برے انداز میں کیچڑ اچھالا اور ان کے نازیبا الفاظ کی وجہ سے محکمہ کی ساکھ اور افسران کی نیک نامی پر مختلف الفاظ استعمال کرتے ہوئے رائے زنی کی ہے اور دیگر ملازمین کو غیر ذمہ دارانہ اور کینہ سے بھر پور ذہنیت کی عکاسی کرتے ہوئے علی الاعلان بغاوت پر اکسایا ہے جس پر جیل ہذا کا وارڈر نمبر5494ناظم ملوث پایا گیا ہے جس کے خلاف تادیبی کاروائی عمل میں لاتے ہوئے شوکاز نوٹس بمطابق قانون جاری کئے گئے ہیں اور اس کے خلاف قانونی دفعات کے تحت فوجداری مقدمات کا بھی اندراج متعلقہ تھانہ میں کروار دیا گیا ہے تاکہ ایسے شرپسند عناصر کی حوصلہ شکنی ہو سکے۔
 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »