رحیم یارخان پولیس کو چونا لگانے والوں کی تلاش.

رحیم یارخان پولیس کے ترجمان  کے مطابق جعلی مجسٹریٹ کی ترنڈہ سوائے خان میں ایک اکٹھ پر اچانک آمد ہوئی جعلی مجسٹریٹ کا تعارف کروانے والے نے  اپنے آپ کو خبریں اخبار کا نمائندہ ظاہر کیا،جعلی مجسٹریٹ فرضی کارروائی کے بعد روپوش ہو گیاپولیس ترجمان کا کہنا ہے کہ  مقامی پولیس کو جعلی مجسٹریٹ اور اسے استعمال کرنے والے کی تلاش کرنے کا حکم دے دیا گیا جعلی مجسٹریٹ اور خود کو خبریں اخبار کا نمائندہ ظاہر کرنےو الے کے خلاف قانون کے مطابق مقدمہ درج کر کے چالان جیل کیا جائے گا اور ساتھ میں یہ اعلان بھی کیا گیاکہ جعلی مجسٹریٹ اور نمائندہ کو ٹریس کروانے والے کو تعریفی سند اور نقدانعام بھی دیا جائے گا

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی فوٹیج کے مطابق خود کو خبریں اخبار کا نمائندہ ظاہر کر کے  ڈاکٹر کاشف کے ڈیرے میں ساتھیوں سمیت داخل ہوتا ہے اورکہتا ہے کہ میرے ساتھ جج صاحب ہیں اور ساتھ ملک افضل کی شناخت کرکے کہتا ہے کہ ملک افضل سامنے بیٹھا ہے ویڈیو بنانے والا اے ایس آئی ذوالفقار کی پہچان کر واتاہے اور ساتھ ہی ویڈیو بند کر دی جاتی ہے 
ذرائع کا کہنا ہے کہ پولیس نے ملک محمد افضل اور طاہر لاشاری کو ڈاکٹر کاشف کے ڈیرے پر چھپا کر رکھا ہوا تھا اور چار پانچ دن سے مبینہ تشدد کا نشانہ بنایا جا رہاتھا 

عدالتی بیلف نے چھاپہ مار کر ملک افضل اور طاہر لاشاری کو بازاب کر وایا ہے 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »