تحریک انصافرحیم یارخان

یونیو رسٹیوں کے لیے 15ارب روپے مختص کیے ہیں,خسرو بختیار

ظاہر پیر میں ایک ٹراما سینٹر کا قیام بھی عمل میں لایا جائے گا

رحیم یار خان وفاقی وزیر پلاننگ ڈویلپمنٹ اینڈ ریفارمرز مخدوم خسرو بختیار نے کہا ہے کہ ضلع رحیم یار خان کو پاکستان کا مثالی ضلع بنانے کے لیے ہر قسم کے اقدامات کیے جائیں گے
انڈسٹریل ایریا صادق آباد کو سی پیک سے جوڑنے کے علاوہ ورلڈ بنک کے تعاون سے ضلع رحیم یا رخان میں ڈویلپمنٹ ، زراعت ، صحت اور تعلیم کے حوالے سے اربوں روپے کے منصوبے مکمل کیے جائیں گے
وہ ڈپٹی کمشنر آفس رحیم یار خان کے کمیٹی روم میں منعقدہ اراکین اسمبلی اور ڈپٹی کمشنر جمیل احمد احمد جمیل کے علاوہ تمام صوبائی اور وفائی محکموں کے ضلعی سربراہان کی میٹنگ سے صدارتی خطاب کر رہے تھے
مخدوم خسرو بختیار کا کہنا تھا کہ وفاق نے یونیو رسٹیوں کے لیے 15ارب روپے مختص کیے ہیں اس رقم میں سے 50کروڑ روپے رحیم یار خان کی خواجہ فرید انجینئر نگ یونیورسٹی کو دیئے جائیں گے جبکہ ضلع بھر میں جاری ترقیاتی کاموں کی رفتار کو تیز کرنے کے لیے ہدایات دیتے ہوئے
وفاقی وزیر مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ ضلع رحیم یار خان میں احساس پروگرام شروع کرنے کے لیے فوری منصوبہ بندی کی جائے گی اور محکموں کو 3سالہ ترقی کا پروگرام بنانے کی ہدایت کی انہوں نے اراکین اسمبلی کی طرف سے کی جانے والی نشاندہی اور شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے
میپکو کے زیر انتظام 2017سے زیر التوا تمام ایل ٹی پرپوزل اور رکے ہوئے منصوبوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے میپکو کے اعلیٰ افسران کو اسلام آباد میٹنگ کے لیے بلانے کا وعدہ کیا
مخدوم خسرو بختیار نے محکمہ صحت کے افسران پر زور دیا کہ وہ ہیپاٹائیٹس کے خاتمہ کے لیے پراجیکٹ منیجمنٹ یونٹ (PMU)تشکیل دیں کیونکہ ضلع رحیم یار خان کی 40لاکھ آبادی کے لیے صحت کی سہولیات زیادہ سے زیادہ باہم پہنچائی جا سکیں اور ہیپاٹائیٹس کے خاتمہ کے لیے زیادہ موثر انداز میں کام ہو سکے
اس موقع پر اراکین اسمبلی نے نشاندہی کرتے ہوئے بتایا کہ سرکاری ہسپتالوں میں پیرامیڈیکل سٹاف کی کمی ہے اور میڈیکل سٹاف کی رہائش گاہوں کی عدم دستیابی کے باعث مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے جس پر وفاقی وزیر نے صوبائی سطح پر یہ مسئلہ حل کرنے کے علاوہ وفاق سے بھی بھر پور تعاون کی یقین دہانی کرائی
خان پور سے ممبر صوبائی اسمبلی میاں شفیع محمد نے بتایا کہ واپڈا خان پور کے افسران کی کارگزاری بہت اچھی ہے مگر رحیم یار خان کے ایس ای آفس میں ہمارے اپنے حلقے کے 26 منصوبے پینڈنگ ہیں جبکہ خان پور میں سوئی گیس کی 15گھنٹے سے زائد لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جس پر وفاقی وزیر نے ان معاملات کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی یقین دہانی کرائی،
لیاقت پور سے ممبر صوبائی اسمبلی چوہدری مسعود احمد نے محکمہ انہار سے متعلق شکایات کرتے ہوئے بتایا کہ افسران اور اہلکار نے مختلف نہروں کے موگے توڑ کر لوٹ مار کر رہے ہیں جس سے خصوصاً چولستان کے علاقوں پر کا استحصال ہو رہا ہے جس پر وفاقی وزیر مخدوم خسرو بختیار نے فوری طور پر نہروں کی حالت بہتر بنانے اور پانی چوری کی روک تھام کے احکامات دیتے ہوئے کہا کہ حکومت زراعت کے شعبہ پر خصوصی توجہ دے رہی ہے ماڈل رحیم یار خان میں 3سالہ ایجوکیشن پروگرام بھی ترتیب دیا جا رہا ہے
زراعت کی مزید بہتری کے لیے پانی کے کھالوں کو پختہ کرنے کا پروگرام بھی جلد شروع کیا جائے گا انہوں نے کہا کہ ہم نے سندھ کو ماحولیات بہتر بنانے اور دیگر مدات میں 3ارب ڈالر کے فنڈز مہیا کیے ہیں ضلع رحیم یار خان میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے واٹر فلٹریشن پروگرام کے تحت مزید 67 جگہوں پر پلانٹ لگائے جا رہے ہیں۔
اس موقع پر ڈپٹی کمشنر رحیم یار خان جمیل احمد جمیل نے وفاقی وزیر کو بریفنگ کے دوران بتایا کہ ضلع رحیم یار خان کے تمام سرکاری محکموں کی باقاعدہ مانیٹرنگ اور اس میں بہتری کے لیے اقداما ت کیے جا رہے ہیں عوامی خدمت کو اپنا شعار بناتے ہوئے اپنی نگرانی میں تمام عوامی فلاح و بہبود کے منصوبوں کی تکمیل کو مانیٹر کیا جا رہا ہے
ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ اس وقت تک تعلیم ، صحت ، زراعت کے علاوہ دیگر شعبوں میں ضلع رحیم یار خان کی مجموعی کارکردگی بہترین ہے فاطمہ فرٹیلائیزر کے تعاون سے ہیپاٹائیٹس کنٹرول پروگرام شروع کیا گیا ہے جس کے بہترین نتائج سامنے آ رہے ہیں۔
چیف ایگزیکٹو ہیلتھ ڈاکٹر سخاوت حسین رندھاوا نے بتایا کہ ضلع رحیم یار خان میں 193 چھوٹے بڑے سرکاری ہسپتال کام کر رہے ہیں جس میں شیخ زید ہسپتال رحیم یار خان 950 بیڈز پر مشتمل ہے جبکہ ضلع میں 3تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال 19رورل ہیلتھ سینٹر ، 104بنیادی مراکز صحت اور 56رورل ڈسنپسریاں شامل ہیں۔
اس میٹنگ میں اراکین اسمبلی جاوید اقبال وڑائچ ، میاں شفیع محمد ، عامر نواز خان ، چوہدری مسعود احمد کے علاوہ سجاد وڑائچ ، سیٹھ عبدالماجد ، سردار احمد خان ل ±نڈ اور دیگر نے شرکت کی جبکہ بعد اازاں وفاقی وزیر مخدوم خسرو بختیار نے شیخ زید میڈیکل کالج اور ہسپتال کا بھی دورہ کیا جہاں پرنسپل اور ایم ایس ڈاکٹر غلام ربانی کے ہمراہ ہسپتال میں داخل مریضوں کو عیادت کرنے کے علاوہ مریضوں اور ان کے لواحقین سے علاج معالجہ اور ادویات کی فراہمی بارے تفصیلات حاصل کیں بعد ازاں ہسپتال کے احاطہ میں میڈیا سے گفتگو کے دوران مخدوم خسرو بختیار نے کہا کہ 10ملین کی لاگت سے لیاقت پور میں ڈیلائیسز سینٹر شروع کیا جا رہا ہے
 ظاہر پیر میں ایک ٹراما سینٹر کا قیام بھی عمل میں لایا جائے گا اس کے علاوہ ضلع رحیم یار خان کے مختلف علاقوں میں مزید اراضی کمپیوٹر سینٹرز قائم کرائے جائیں گے تاکہ زمینداروں کی مشکلات اور سفر کو کم کیا جا سکے انہوں نے کہا کہ سڑکوں کی تعمیر اور بجلی کی فراہمی کے علاوہ سکولوں ، تعلیمی اداروں میں ناکافی سہولیات کے لیے خصوصی فنڈز مہیا جائیں گے ضلع رحیم یا رخان میں نئے بننے والے کالجز کو زیادہ فعال بنانے کے لیے ہر قسم کی سہولیات دی جائیں گی۔ 
 

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button