fbpx

مزدوروں کا عالمی دن,

labour day rahim yar khan news
رحیم یارخان :پاکستان تحریک انصاف کے ممبرقومی اسمبلی چوہدری جاویداقبال وڑائچ‘ صوبائی پارلیمانی سیکرٹری عشروزکوۃ چوہدری محمدشفیق‘ ممبرصوبائی اسمبلی چوہدری آصف مجید‘ چوہدری نعیم شفیق ودیگرنے کہا ہے کہ یوم مئی ہمیں ان محنت کشوں کی یاد دلاتا ہے جنہوں نے 1886 شکاگو میں اپنے حقوق کیلئے آواز بلند کی‘ ہمارے محنت کش بھی اپنے حقوق کیلئے آواز بلند کرتے رہے اور انکی جدوجہد رنگ لائی اور وہ بھی معاشرے کے ایک اہم فرد کی حیثیت سے آج ملک و قوم کی ترقی میں اپنا کردار ادا کررہے ہیں۔ عالمی یوم مزدورکے موقع پر اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ  آج مزدورصرف صنعت یابھٹوں پرکام کرنے والاہی نہیں بلکہ مزدورکی تعریف وسعت اختیارکرچکی ہے اوررسمی شعبوں کے ساتھ ساتھ غیررسمی شعبے کے محنت کشوں کی ایک بڑی تعدادموجودہے‘انہوں نے کہاکہ اگرمحنت کش طبقے کوجیناہے توپھرظلم‘ استحصال‘ جبر‘ دھونس پرمبنی ریاستی ڈھانچے کوتبدیل کرنے میں پی ٹی آئی کاساتھ دیناہوگاورتمام محنت کشوں کوحقوق کے حصول کے لیے اکٹھے متحدہوناہوگاتاکہ ان کامعاشی قتل ختم ہوسکے‘ انہوں نے کہاکہ محنت کشوں‘ مزدوروں اورغریب طبقے کے ساتھ مل بیٹھ کرانہیں دلی سکون اورراحت ملتی ہے اوران کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ اپناساراوقت عوام کے لیے وقف رکھیں اوران کے حقوق کی جدوجہدکرتے رہیں‘ انہوں نے کہاکہ پی ٹی آئی عوام بالخصوص متوسط طبقے کی حقیقی ترجمانی کرکے انہیں بنیادی حقوق ان کی دہلیزپرپہنچائے گی تاکہ ان میں پائی جانے والی محرومیاں ختم ہوں۔
labour day rahim yar khan
labour day rahim yar khan
رحیم یار خان… عالمی یوم مزدوراں کے موقع پر سابق ایم پی اے چودھری جاوید اکبر ڈھلوں، سابق صدر ڈسٹرکٹ بار نذیر لاڑ، پاکستان کسان اتحاد کے ڈسٹرکٹ آرگنائزر جام ایم ڈی گانگا، ضلعی صدر ملک اللہ نواز مانک شاہد رشید بھٹہ. ملک محمد اختر کھوکھر، سید حسنین شاہ نے پاکستان ٹریڈ ڈیفینس یونین کی ریلی کے بعد خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیادی جماعتوں اور حکمرانوں کو چاہئیے کہ وہ مزدوروں کی اجرت کے حوالے بنائے گئے قوانین پر سختی سے عمل درآمد کروائیں. مہنگائی کو سامنے رکھتے ہوئےمزدوروں کی کم از کم تنخواہ اتنی ضرور ہو کہ وہ اچھی غذا کھا اور بیمار ہونے کی صورت میں اپنا اور بچوں کا علاج کروا سکے اپنے بچوں کو تعلیم دلوا سکے. سوشل سیکورٹی فنڈز کا آڈٹ جروایا جائے وہ کہاں اور کون خرچ کر رہا ہے. بہت سارے ادارے ملازمین کی ریکارڈ میں درج کی جانے والی تنخواہوں کی بجائےانہیں کم تنخواہیں دیتے ہیں. یہ تخواہوں پر ڈکیتی ہے. جام ایم ڈی گانگا نے کہا کہ صنعتی مزدوروں کے ساتھ ساتھ کسان مزدوروں کے تحفظ کے لیے بھی قوانین بنانے کی ضرورت ہے. کسان مزدوروں کا بہت زیادہ استحصال ہو رہا ہے. ان کی آواز اٹھانے والا کوئی نہیں. اب پاکستان کسان اتحاد ان کی آواز بنےگا. جہاں کہیں کسانوں اور کسان مزدوروں کے ساتھ ظلم و زیادتی ہو وہ ہمارے ساتھ رابطہ کریں ہم سول سوسائٹی کے انسان دوست لوگوں کے ساتھ مل کر ان کا بھر پور تحفظ کریں گے. ملک اللہ نواز مانک نے کہا کہ حیدر چغتائی، سید زمان، احمد کھوکھر پسے ہوئے مظلوم و مزدور طبقے کی توانا آواز اور انتھک جدوجہد کا نام ہے. اس موقع پر احمد خان رند، مظہر سعید گوپانگ، عبداللہ فریدی بھی موجود تھے
saima tariq rahim yar khanرحیم یارخان:پاکستان تحریک انصاف شعبہ خواتین کی سٹی صدرصائمہ طارق نے کہاکہ قومی ترقی کا خواب مزدوروں کی خوشحالی کو یقینی بنانے کے بغیر حاصل نہیں کیا سکتا۔ عالمی یوم مزدور کے موقع پر اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ سمیت تمام اداروں کو مزدوروں کے قوانین پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کیلئے نہ صرف ان کے حقوق کی حفاظت کے حوالے سے بلکہ کارکنوں کی سماجی اور اقتصادی ترقی کیلئے مشترکہ کوششوں کو تیز کرنے کی ضرورت ہے۔صائمہ طارق نے کہاکہ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح نے کارکنوں کے حقوق کیلئے جدوجہد کی اور مزدوروں کے حقوق کی حفاظت کیلئے پارلیمان سے ابتدائی قانون کی منظوری دی اور بعدازاں پارلیمان نے کارکنوں کی فلاح وبہبود کیلئے قانون سازی کو جاری رکھا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف نے اپنے منشورمیں مزدوراورمحنت کش طبقے کے حقوق دینے کاعہدکیاہے جوپوراکیاجارہاہے۔
رحیم یارخان :کستان پیپلزپارٹی شعبہ خواتین کی سٹی صدرآسیہ کنول اورسٹی  جنرل سیکرٹری نسرین شاہدنے کہا ہے کہ ذوالفقار علی بھٹو مزدوروں اور کسانوں کے لیڈر تھے۔ انہوں نے مزدوروں کو حقوق دلانے کی بات کی لیکن مزدوروں کو اپنے حقوق کے لئے ایک ہونا پڑے گا۔عالمی یوم مزدورکے موقع پراپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ شکاگوکے مزدوروں پرجو ظلم کیا گیا جس کے خلاف پوری دنیا میں آج بھی احتجاج ہو رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو مزدوروں اور کسانوں کے لیڈر تھے انہوں نے آ کر مزدوروں کو حقوق دلانے کی بات کی لیکن اب مزدور ایک پیچ پر نہیں رہے انہیں اپنے حقوق حاصل کرنے کے لئے ایک ہونا پڑے گا انہوں نے کہا کہ پاکستان بننے کے کچھ ہی عرصہ بعد مارشل لاء نافذ کر دیا گیا تھا جس کی وجہ سے ملکی ترقی کی رفتار بہت سست ہوئی تھی جبکہ اس کے بعد لگنے والے مارشل لاء بھی ملکی ترقی کی راہ میں رکاوٹ بنتے رہے‘ پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ مزدوروں اورمحنت کش طبقے کی خاطرآوازاٹھائی ہے اورآئندہ بھی جدوجہدجاری رکھیں گے۔
رحیم یارخان:آل پاکستان کلرکس ایسوسی ایشن کے ضلعی صدرچوہدری محمدبوٹاعابدنے کہاہے کہ شکاگوکے شہیدمزدوروں اوران کے عظیم قائدین نے اپنی جانوں کانذرانہ دے کرثابت کیاتھاکہ حقوق کی پاسداری کے لیے جان تک نچھاورکی جاسکتی ہے لیکن حکومتوں کی عدم توجہی اورذاتی مفادات کے لیے ہردورمیں مزدوروں کااستحصال ہواہے اورکوئی بھی حکومت مزدوروں کے حقوق دلانے میں اپناکردارادانہ کرسکی ہے‘ موجودہ حکومت مزدوروں کوحقوق توکیایوم مزدورپرمزدوروں کی قربانیوں پرانہیں خراج تحسین بھی پیش نہ کرسکی۔عالمی یوم مزدوراں کے موقع پرایپکاہاؤس میں سرکاری ملازمین واہلکاران سے گفتگوکرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ بھی سمجھناہوگاکہ آج مزدورصرف صنعت یابھٹوں پرکام کرنے والاہی نہیں بلکہ مزدورکی تعریف وسعت اختیارکرچکی ہے اوررسمی شعبوں کے ساتھ ساتھ غیررسمی شعبے کے محنت کشوں کی ایک بڑی تعدادموجودہے لیکن موجودہ ریاستی نظام وڈھانچے میں محنت کش طبقے کے لیے کچھ نہیں کیونکہ موجودہ سیاسی جماعتیں سرمایہ داراورجاگیردارطبقے کی نمائندہ ہیں‘اس موقع پرسردارمحمدفاروق خان گوپانگ‘ عبدالرزاق بلوچ‘ اشتیاق لیاقت بھیلہ‘ غلام مصطفے عباسی‘ میاں اکرام الحق‘ حسن محمودچوہدری‘ وقارنیازی‘ فاضل کورائی‘ حسنین ملک‘ محمدآصف‘ تنویرالحسن شاکر‘ سردارمحمداحمدسیف خان ببر ودیگراہلکاران بھی موجودتھے۔رحیم یارخان :صدرڈسٹرکٹ باررحیم یارخان حسان مصطفے ایڈووکیٹ اورجنرل سیکرٹری عمران اشرف ایڈووکیٹ نے یوم مئی کے حوالے سے اپنے خیالات کا ا ظہار کرتے ہوئے کہا کہ خو ن پسینہ ایک کرنے والامزدور تمام بنیادی حقوق سے محروم ہے،روٹی،کپڑا،مکان تعلیم،علاج مزدور کے خواب بن چکاہے،مہنگائی کے ا س طوفان میں پندرہ ہزار روپے ماہانہ تنخواہ لینے والا بے یار و مددگار ہے،صنعت کار راتوں رات امیر سے امیر ہورہا ہے،مزدور غربت کی چکی میں پس رہا ہے،غربت سے تنگ نوجوان بے راہ روی کا شکار ہورہا ہے،ایک طرف عیش و عشرت اور دوسر ی طرف فاقے اور تنگدستی ہے،مزدور کی فلاح کیلئے بنائے گئے سرکاری محکمے آلہ کار بن چکے ہیں،لیبر پالیسی کا تاحال کوئی امکان نا ہے،تمام سیاسی پاریٹوں نے مزدور کی فلاح کیلئے کوئی کام نہیں کیا ہے،جسکی کی وجہ سے مزدورں میں بے چینی بڑھ رہی ہے،مزدور کی پنشن صرف 5250روپے ہے جس پر ایک آدمی کا گزر بھی بہت مشکل ہے،جب تک ہمارے ملک کا مزدور خوشحال نہیں ہوگا معاشرئے میں بگاڑ پید ا ہوتا رہے گا۔رحیم یارخان:اکستان پیپلزپارٹی شعبہ خواتین کی سٹی صدرآسیہ کنول اورسٹی  جنرل سیکرٹری نسرین شاہدنے کہا ہے کہ ذوالفقار علی بھٹو مزدوروں اور کسانوں کے لیڈر تھے۔ انہوں نے مزدوروں کو حقوق دلانے کی بات کی لیکن مزدوروں کو اپنے حقوق کے لئے ایک ہونا پڑے گا۔عالمی یوم مزدورکے موقع پراپنے بیان میں انہوں نے کہا ہے کہ شکاگوکے مزدوروں پرجو ظلم کیا گیا جس کے خلاف پوری دنیا میں آج بھی احتجاج ہو رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو مزدوروں اور کسانوں کے لیڈر تھے انہوں نے آ کر مزدوروں کو حقوق دلانے کی بات کی لیکن اب مزدور ایک پیچ پر نہیں رہے انہیں اپنے حقوق حاصل کرنے کے لئے ایک ہونا پڑے گا انہوں نے کہا کہ پاکستان بننے کے کچھ ہی عرصہ بعد مارشل لاء نافذ کر دیا گیا تھا جس کی وجہ سے ملکی ترقی کی رفتار بہت سست ہوئی تھی جبکہ اس کے بعد لگنے والے مارشل لاء بھی ملکی ترقی کی راہ میں رکاوٹ بنتے رہے‘ پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ مزدوروں اورمحنت کش طبقے کی خاطرآوازاٹھائی ہے اورآئندہ بھی جدوجہدجاری رکھیں گے۔

 

labour day rahim yar khan news

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close