fbpx

او بلڈ گروپ والے افراد کے کورونا سے متاثر ہونے کا امکان نسبتاً کم ہوتا ہے، نئی تحقیق

رحیم یارخان (ویب ڈیسک )ایک ابتدائی ریسرچ میں بتایا گیا ہے کہ او بلڈ گروپ والے افراد کے کورونا سے متاثر ہونے کا خدشہ نسبتاً کم ہوتا ہے۔

’23 اینڈ می’ نامی بائیو ٹیکنالوجی کمپنی کی ریسرچ نے 7 لاکھ 50 ہزار افراد کے ڈیٹا پر تحقیق کرنے کے بعد یہ نتیجہ اخذ کیا ہے کہ او بلڈ گروپ والے افراد میں کورونا سے متاثر ہونے کا خطرہ دیگر بلڈ گروپ والوں کی نسبت 9 سے 18 فیصد کم ہوتا ہے۔

اسی طرح جن مقامات پر کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کا امکان زیادہ ہو، جیسے اسپتالوں میں کام کرنے والے یا وبا سے زیادہ متاثرہ علاقوں کے رہائشی، وہاں بھی او بلڈ گروپ والوں کے وائرس کے شکار ہونے کا امکان 13 سے 26 فیصد کم ہوتا ہے۔

تحقیق سے یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ او بلڈ گروپ والوں کی طبیعت کی خرابی کے باعث اسپتال داخل ہونے کی شرح بھی بہت کم ہے۔

اپریل میں شروع ہونے والی اس تحقیق میں شرکاء سے مختلف سوالات کیے گئے، ٹیم نے یہ بات دریافت کی کہ خون کی مختلف اقسام تشکیل دینے والے ‘اے بی او’ جین کا تعلق کورونا سے متاثر ہونے کے کم خطرے سے ہے۔

ریسرچ کے مطابق او بلڈ گروپ والوں میں 1.3 فیصد افراد کورونا سے متاثرہ پائے گئے، اے بلڈ گروپ والے 1.4 فیصد جبکہ بی اور اے بی بلڈ گروپ والے 1.5 فیصد افراد کورونا کا شکار ہوئے۔

کمپنی نے اپنے پریس ریلیز میں یہ بات واضح کر دی ہے کہ یہ تحقیق ابھی ابتدائی سطح کی ہے۔

تحقیق کرنے والی ٹیم کے اہم ریسرچر ایڈم آٹن نے بلومبرگ کو بتایا کہ کورونا وائرس، خون کا جمنا اور خون کے گردشی نظام کے آپسی تعلق کے متعلق بھی کافی رپورٹس سامنے آ رہی ہیں جن سے یہ اشارہ ملتا ہے کہ جینز کا کورونا سے تعلق موجود ہے۔

انہوں نے کہا کہ ابھی وبا کے ابتدائی دن ہیں، اگرچہ سیمپل سائز کافی بڑا ہے لیکن جینز اور کورونا کے تعلق کے متعلق حتمی طور پر تعلق دریافت کرنے کے لیے یہ ناکافی ہے۔

آٹن کا کہنا تھا کہ ہم واحد گروپ نہیں ہیں جو ان معاملات کو دیکھ رہا ہے، آخر کار سائنسی کمیونٹی کو اپنے ریسورسز اس بات پر مرکوز کرنے پڑیں گے کہ جینیٹکس اور کورونا کا آپس میں کیا تعلق ہے۔

مارچ میں چینی سائسندان بھی ملتے جلتے نتائج پر پہنچے تھے کہ او بلڈ گروپ والوں میں کورونا میں مبتلا ہونے کا خطرہ واضح طور پر کم ہوتا ہے۔

تاہم یونیورسٹی آف مشی گن کی پروفیسر ڈاکٹر لارا کولنگ کا کہنا ہے کہ یہ تحقیق محدود پیمانے پر کی گئی ہے کیونکہ ٹیم نے بلڈ گروپ اور کورونا انفیکشن کے متعلق شرکاء کے جوابات سے نتائج اخذ کیے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم سب کو محتاط رہنا چاہیئے کیونکہ ہمارے صحت کے مسائل اور رویے بلڈ گروپ کی نسبت زیادہ بڑا کردار ادا کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »