آصف علی زرداری کی گرفتاری کیخلاف پریس کلب کے باہر احتجاج

پیپلزپارٹی اور ذیلی تنظیموں کے زیر اہتمام سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری کیخلاف پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا‘نیب اور تحریک انصاف کی حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی، مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر آصف علی زرداری کیساتھ اظہار یکجہتی کیلئے نعرے درج تھے۔ صوبائی رہنما پیپلزپارٹی و سابق ٹکٹ ہولڈر رانا طارق محمود خاں‘سٹی صدر میاں خالد بن سعید‘رئیس جہانگیر ورند ایڈووکیٹ‘سٹی صدر خواتین ونگ منزہ عرفان‘جنرل سیکرٹری فوزیہ اکرام‘ صدر اقلیتی ونگ مکھنا جی‘خالدہ مغل‘اے ڈی شہکی‘ رانا سرور‘طیب کھوکھر‘ محمد عارف و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری سوچی سمجھی سازش ہے حکومت اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر کے جمہوریت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ایسی صورتحال میں ملک میں سیاسی عدم استحکام پیدا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گرفتاری سے سچائی کو نہیں خاموش کیا جا سکتا ہے۔حکومت نیب کو سیاسی قائدین کو زیر عتاب لانے کے لیے استعمال کررہی ہے سیاسی اداروں کو سیاست میں مداخلت کرنا جمہوریت کو کمزور کرنے کے مترادف ہے۔انھوں نے مزید کہاکہ سابق صدرآصف علی زرداری کی گرفتاری انتقامی کارروائی ہے موجودہ حکومت کرپشن زدہ حکومت ہے جس کے وزیروں کیخلاف نیب میں مقدمات در ج ہیں ہمارے قائدین کو جیلوں میں بند کر کے ملک کے عوام کیساتھ غداری کی جارہی ہے جسے کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔

پیپلز پارٹی کے رکن پنجاب اسمبلی ممتاز علی چانگ نے کہا ہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری کی گرفتاری سوچی سمجھی سازش ہے حکومت اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر کے جمہوریت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ایسی صورتحال میں ملک میں سیاسی عدم استحکام پیدا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گرفتاری سے سچائی کو نہیں خاموش کیا جا سکتا ہے۔حکومت نیب کو سیاسی قائدین کو زیر عتاب لانے کے لیے استعمال کررہی ہے سیاسی اداروں کو سیاست میں مداخلت کرنا جمہوریت کو کمزور کرنے کے مترادف ہے۔ پیپلز پارٹی نے ہمیشہ عدالتوں کو احترام کیا ہے اور جمہوریت کی پاسداری کے لیے پاکستان کے وقار کو ملحوظ خاطر رکھا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ حکومت گرانا پیپلز پارٹی کا ایجنڈا یا مقصد نہیں ہے‘ پیپلز پارٹی جمہوری نظام کی بہتری اور عوامی حقوق کے تحفظ کے لیے پہلے بھی جنگ لڑتی رہی ہے اور آئندہ بھی لڑتی رہے گی۔؎

Show More

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close