fbpx

پولیس اور سیاستدان کا ساتھ چولی دامن کا ھے

"پولیس اور سیاستدان"

موجودہ دور میں پولیس اور سیاستدان کا ساتھ چولی دامن کا ھے جب سے پولیس جوائن کی مختلف ادوار میں کبھی بھی کوئی MPA یا MNA تھانہ پر یا کسی آفس میں نظر نہیں آتا تھا 
پھر ایک دور آیا 1988 میں تھانہ لیاقت پور ضلع رحیم یار خان تعینات تھا اِن آنکھوں نے دیکھا کہ ایک آزاد MPA کو زبردستی پولیس کے ذریعے اُٹھا کہ چھانگا مانگا کے جنگل میں پُنہچایا گیا میرے لیے یہ بلکل نئی بات تھی
پھر میں نے دیکھا اپنے دوست پولیس آفسروں کو پوسٹنگ کیلئے سیاستدانوں کی منتیں کرتے اپنے ضلع کے سینیر آفسران کو خوشامند کرتے
میں نے اپنے ایک دوست سے پوچھا کہ ھم کیوں سیاستدانوں کی منتیں کر رھے ھیں تو بولے خان صاحب تھوڑی سی بے غیرتی سو سُکھ
اور کُچھ عرصہ بعد انہیں دوست سے ملاقات ھوئی جن کا تبادلہ ایک سیاستدان نے کروایا تھا کافی پریشان دیکھائی دیئے پوچھنے پر بولے بھائی
اب لائف بہُت سی بے غیرتی اور تھوڑا سُکھ ھو گئی ھے
میں نے اپنی پولیس سروس میں بہُت کم PSP آفسران دیکھے جو سیاستدانوں کے کیہنے پر پوسٹنگ نہیں کرتے تھے اور یہی وجہ ھے پولیس ملازمان اپنے پوسٹنگ ٹرانسفر کیلے سیاستدانوں کے دروازے پر بیٹھے رھتے ھیں
پھر ایک وقت آیا جب ھم ترقی کر کے DSP ھو گے پوسٹنگ اور مُشکل ھو گئی
شہباز شریف نے پولیس کلچر کو تبدیل کرنے کے بڑے نعرے لگائے پولیس کو سیاست سے پاک کرنے کے بھی علانات فرمائے گے


مگر Dsp لگنے کیلئے حلقہ کے دونوں MPA اور MNA کی سفارش ضروری تھیی DPO کیلئے حمزہ شہباز یا شہباز شریف کو خوش کرنا لازم تھا PTI کی حکومت آنے کے بعد لگا تھا کوئ تبدیلی ھو گی مگر آج بھی پوسٹنگ ٹرانسفر میں سیاستدان اُسی طرح ملوث ھیں خاس طور پر پنجاب میں کمزور حکومت کی وجہ سے سفارش اور زیادہ ھو گئی ھے اُسی طرح سیاسی پوسٹنگ ھو رہی ھیں
جنوبی پنجاب کی بدقسمتی ھے کہ یہاں کے سیاستدان صرف اپنی مرضی کے SHO لگوا کے خوش ھو جاتے ھیں
پولیس کو ٹھیک کیا جا سکتا ھے صرف ھمارے سینیرز یہ سوچ لیں کہ عزت ذلت زندگی موت پوسٹنگ ٹرانسفر صرف اللہ تعالیٰ کے ھاتھ میں ھے
کتنے ٹرانسفر کریں گے اگر ھمارے سینیرز ڈٹ جائیں اور ھمت کریں تو یہ سیاس گورنمنٹ کچھ بھی نہیں کر سکتیں مگر ھوتا ھے کہ ھمارے آفسر سب سے پہلے ھماری قربانی دیتے ھیں اور اپنی نوکری اور پوسٹنگ پچاتے ھیں
پھر ظاھر ھے بندہ اُسی کے پاس جائے گا جہاں سے علاج ممکن ھو اور وہ علاج MPA MNA کے پاس ھے ھمارے سینیرز کے پاس نہیں

عزیز اُللہ خان
ڈی ایس پی(ریٹائرڈ)
ایڈوکیٹ ھائیکورٹ ملتان

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close