fbpx

پولیو سے نجات کے عالمی دن کے موقع پر سیمینار کا اہتمام

رحیم یار خان: پولیو سے نجات کے عالمی دن کے موقع پر ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی کی جانب سے میونسپل کارپوریشن رحیم یار خان کے جناح ہال میں سیمینار کا اہتمام کیا گیا جس کے مہمان خصوصی ڈپٹی کمشنر علی شہزاد تھے جبکہ تقریب میں سی ای او ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا، پی ٹی آئی رہنما چوہدری فاروق وڑائچ، چوہدری نعیم شفیق سمیت ہیلتھ افسران، پولیو ورکز اور تعاون کرنے والے اداروں کے نمائندگان نے شرکت کی۔
سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے کہا کہ دنیا بھر میں آج کا دن پولیو سے نجات کے طور پر منایا جا رہا ہے مگر پاکستان اور افغانستان دو واحد ممالک ہیں جنہوں نے اپنے ممالک سے اس موذی مرض کے خاتمہ کےلئے جنگ لڑنا ہے ۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان پولیو کو ختم کرنے کے نزدیک تھا مگر کورونا کے باعث ہمیں انسداد پولیو مہم کو روکنا پڑا جس کی وجہ سے اس مرض نے ایک بار پھر سر اٹھا لیا ہے اور آج کے دن کو ہم نے اس عزم کے ساتھ منانا ہے کہ انشاءاللہ جلد پاکستان بھی ان ممالک کی فہرست میں شامل ہو گاجہاں یہ دن پولیو سے نجات کے باعث بطور خوشی منایا جا رہا ہے ۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان سے پولیو کا خاتمہ حکومت اور تمام ادار وں کی اولین ترجیح ہے اور یہ اس وقت ممکن ہے کہ حکومت اور اداروں کے ساتھ ساتھ پوری قوم اس موذی مرض کے خاتمہ اور اپنے معصوم بچوں کو عمر بھر کی معذوری سے محفوظ بنانے کے لئے اداروں کے ساتھ تعاون کریں اور اپنے پانچ سال سے کم عمر بچوں کو ناصرف پولیو سے بچاﺅ کی ویکسین کے دو قطرے پلوائیں بلکہ محکمہ صحت کی ہدایات کے مطابق بچوں کی پیدائش سے لیکر مقرر عمر کو پہنچنے تک حفاظتی ٹیکہ جات کے کورس کو بھی مکمل کرائیں۔
انہوں نے کہا کہ پولیو مہم میں حصہ لینے والے ورکرز ہمارے قومی ہیرو ہیں اور قوم ان کی خدمات کو سلام پیش کرتی ہے۔سی ای او ہیلتھ اتھارٹی ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا نے اپنے خطاب میں کہا کہ پولیو مہم کے آغاز سے قبل پاکستان میں ہر سال 20ہزار سے زائد بچے اس موذی مرض کا شکار ہو تے تھے تاہم حکومتی اقدامات اور اداروں کی کوششوں سے اب ہم پولیو کو ملک میں ختم کرنے کے قر یب میں ۔اس سال ملک بھر میں79پولیو کے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جو باعث تشویش ہے ۔
انہوں نے کہا کہ اس قومی مہم کی ادائیگی پر 100سے زائد پولیو ورکرز نے جام شہادت نوش کیا اور آج اس تقریب میں ہم اپنے شہداءکی قربانیوں کو سلام پیش کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کرتے ہیں کہ اپنے شہداءکی قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے اور پاکستان کو پولیو سے پاک ملک بنائیں گے۔
تقریب سے پاکستان تحریک انصاف کے ضلعی رہنماﺅں چوہدری فاروق وڑائچ، چوہدری نعیم شفیق نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو پولیو فری ملک بنانے کے لئے معاشرے کے تمام طبقات کا اپنی قومی ذمہ داری کا ادارک کرنا ہو گا اور پولیو کے خاتمہ کے لئے والدین اپنے پانچ سال سے کم عمر بچوں کو پولیو سے بچاﺅ کی حفاظتی ویکسین کے قطرے لازمی پلوائیں ۔
سیمینار کے اختتام پر انسداد پولیو مہم میں بہترین خدمات انجام دینے والے ہیلتھ افسران ، پولیو ورکرز اور تعاون کرنے والے اداروں کے نمائندگان میں ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے دیگر مہمانوں کے ہمراہ تعریفی سرٹیفکیٹس تقسیم کئے
جبکہ اس موقع پر26اکتوبر2020سے شروع ہونے والی انسداد پولیو مہم کا ڈپٹی کمشنر علی شہزاد، چوہدری فاروق وڑائچ، چوہدری نعیم شفیق، ڈاکٹر سخاوت علی رندھاوا و دیگر نے پانچ سال سے کم عمر بچوں کو پولیو سے بچاﺅ کی حفاظتی ویکسین پلا کر افتتاح کیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »