رحیم یارخان : پنجاب پولیس کی مبینہ زیادتیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ

رحیم یارخان : سندھ پنجاب کی سرحدی پٹی کے علاقے نواحی گائوں وسطی بجار پیومار کے مکینوں کا پنجاب پولیس کی مبینہ زیادتیوں کے خلاف احتجاجی مظاہرہ‘شاہ والی پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی،پولیس ہمارے گھروں میں گھس کے 13سالہ بچے،3 بکریاں 2 بھیڑیں، ٹریکٹر و قیمتی سامان لے گئی ہے،عدالت میں بھی معاملے کی تحقیقات کیلئے درخواست دی ہے ہمیں انصاف فراہم کرکے پولیس کے خلاف محکمانہ کاروائی کی جائے۔مظاہرین کا مطالبہ

سندھ پنجاب کی سرحدی پٹی کے علاقے نواحی گاں وسطی بجار پیومار کے رہائشیوں کا پنجاب پولیس کی زیادتیوںاور پولیس گردی کے خلاف رمضان مزاری عرف نینگر مزاری، شریف مزاری، لیاقت مزاری کی سربراہی میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیااور شاہ والی پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے نینگر مزاری کا کہنا تھا کہ شاہ والی ایس ایچ او شمس لودھی نے کچھ روز قبل بھاری پولیس نفری کے ہمراہ ہمارے گھروں میں گھس کر چاردیواری کا تقدس پامال کیا اور زبردستی گھر میں داخل ہوتے ہی بدکلامی شروع کی اور بچوں پر تشدد کیا، شاہ والی پولیس زبردستی ہمارے گھر سے 3 بکریاں، 2 بھیڑیں و قیمتی سامان و 13 سالہ بچے بنا مزاری کو اٹھا کر لے گئی ہے، پولیس ہم سے بچے کی واپسی کے لئے بھاری رقم طلب کررہی ہے،

ہم ڈی ایس پی روجھان مزاری کے پاس گئے ہیں کہ ہمیں بیٹا و سامان واپس کرے تاحال ہماری کوئی شنواائی نہیں ہوئی ہے،ہم وزیراعظم پاکستان عمران خان ،وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار، آئی جی پنجاب و دیگر اعلی حکام سے مطالبہ کرتے ہیں کہ معاملے کی تحقیقات کرکے ہمیں انصاف فراہم کیا جائے،بلاجواز گرفتار بچے کو فوری رہا کیا جائے بصورت دیگر سخت احتجاج کیا جائے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »