رحیم یارخان

رحیم یارخان میں پانی چوروں کے احتجاج میں کیا ہوا

رحیم یارخان:دیگی مائنر کے کاشتکاروں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ دیگی مائنر کے پانی کو محکمہ انہار کے اہلکاروں نے اپنی جاگیر سمجھتے ہوئے بااثر زمینداروں کوموگے تڑوا کر پانی چوری کی کھلی چھٹی دے رکھی ہے‘ پانی چوری میں ملوث حاجی شبیراحمدمہر اور اسلم مہر کے خلاف محکمہ انہار کے اعلیٰ افسران نے قانونی کارروائی کرنے کی بجائے موگہ سیل کرکے دو سو کسانوں کو پانی سے محروم کردیا۔ پانی کی بندش اور  کاشتکاروں کو بلاجواز پریشان کرنے پر کاشتکارعلی اکبر چوہان‘ محمدایوب چوہان‘ شاہد چوہان‘ مختار احمدچوہان‘ محمدعلی چوہان‘ نذیر احمد چوہان‘ ظہور احمد‘ عبدالحمید برڑہ‘ یعقوب چوہان‘ شوکت چوہان‘ غلام عباس‘ قمرالدین درکھان‘ رفیق احمد‘ رشیداحمد ودیگر نے احتجاج کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر علی شہزاد‘ ایکسین اور ایس ڈی او انہار سے پانی فراہمی کا مطالبہ کیا ہے۔ متاثرین نے کہا کہ عرصہ دراز سے دیگی مائنر میں تعینات محکمہ انہار کے اہلکاروں نے پانی چوری کروانے کیلئے موگے تڑوانے کا سلسلہ شروع کررکھا ہے جبکہ بھاری نذرانہ نہ دینے والے غریب کاشتکار نہ صرف پانی سے محروم ہیں بلکہ ان کی فصلات بھی تباہ ہورہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ رات کے اندھیرے میں ایس ڈی او نے موگہ 23000پر چھاپہ مار کر شبیراوراسلم نامی اشخاص کو رنگے ہاتھوں پکڑا مگر کارروائی کرنے کی بجائے موگہ سیل کرکے موگے سے سیراب ہونے والے کاشتکاروں پر ظلم کیا ہے۔متاثرین نے وزیراعلیٰ پنجاب‘ صوبائی وزیرزراعت‘ ڈپٹی کمشنر علی شہزاد سے مطالبہ کیا کہ پانی چوری اور موگے توڑنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے اور سیل ہونیوالا موگہ کھول کر کاشتکاروں کو پانی کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button