ضلع بھر میں رمضان بازاروں کا آغاز کر دیا گیا،

rahiim yar khan news ramzan bazar

رحیم یار خان:وزیر اعلیٰ پنجاب کی ہدایت پر ضلع بھر میں رمضان بازاروں کا آغاز کر دیا گیا، ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل نے عید گاہ اور پرانی غلہ منڈی میں لگے رمضان بازاروں کا دورہ کیا اور تمام سٹالز پر اشیاء خورونوش کا وافر سٹاک، معیاری اشیاء کی فروخت یقینی بنانے اور چینی و آٹے کی فروخت کا تمام ریکارڈ روزانہ کی بنیادپر محفوظ رکھنے کی ہدایات دیں۔ڈپٹی کمشنر نے اسسٹنٹ کمشنر اعتزاز انجم کے ہمراہ رمضان بازاروں کا دورہ کرتے ہوئے ہدایت کی کہ تمام سٹالز پر متعلقہ اشیاء کے نرخ نامے نمایاں جگہ پر آویزاں کئے جائیں اور اس امر کو یقینی بنایا جائے کہ کسی بازار اور سٹال پر ناقص اور غیر معیاری اشیاء فروخت نہ کی جائیں۔انہوں نے رمضان بازار میں لگے تمام سٹالز کا معائنہ کیا اور دکانداروں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ رمضان المبارک کے دوران جائز منافع میں بھی کمی کرتے ہوئے صارفین کو اشیائے ضروریہ سستے داموں فروخت کریں تاکہ کم آمدن والے افراد بھی اس سے مستفید ہو سکیں۔انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ بازاروں میں اشیاء کے معیار اور قیمتوں سے متعلق شکایات کے اندراج و ازالہ کے لئے شکایت سیل آپریشنل رکھاجائے تاکہ حکومتی سبسڈی اور اسکے ثمرات عوام تک منتقل کئے جا سکیں۔اس موقع پر انہوں نے رمضان بازار میں خریداری کے لئے آئے افراد اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ضلع رحیم یار خان میں 11رمضان بازار لگائے گئے ہیں وزیر اعلیٰ پنجاب کا ویژن تھا کہ حکومتی سبسڈی کے ثمرات دیہی آبادیوں تک بھی پہنچائیں جائے جس کے لئے رکن پور اور ترنڈہ محمد پناہ میں دو نئے رمضان بازار لگائے گئے ہیں۔

رحیم یار خان:ڈپٹی کمشنر جمیل احمد جمیل نے کہا ہے کہ ٹیچنگ کوالٹی، سکولوں میں سہولیات کی فراہمی پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا، سکولوں میں دستیاب نان سیلری فنڈز کو سہولیات کی فراہمی کے لئے شفاف انداز سے استعمال کیا جائے، ڈپٹی ڈی اوز اور اے ای اوز کے سکولوں میں وزٹ کے نتائج کوالٹی آف ایجوکیشن اور سہولیات کی فراہمی کی صورت میں نظر آنے چاہیے، محض کاغذی کاروائی کے لئے سکولوں کے دورے ناقابل قبول ہیں ، متعلقہ تحصیل کے ڈپٹی ڈسٹرکٹ آفیسر ایجوکیشن اور اے ای اوز سے براہ راست کارکردگی بارے پوچھا جائے گا، ناقص کارکردگی پر سزا اور بہتر کارکردگی پر انعامات سے نوازا جائے گا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی تحصیل لیاقت پور کے افسران سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر شیخ محمد طاہر،سی ای او ایجوکیشن اتھارٹی ملک مختار احمد، ڈی او سیکنڈی میاں عزیز قریشی، ڈی او ایلیمنٹری شہناز چوہدری، ڈپٹی ڈی او ایجوکیشن (زنانہ)لیاقت پور ڈاکٹر عذرا شاہین سمیت تحصیل کے تمام اسسٹنٹ ایجوکیشن آفیسرز موجو دتھے۔ڈپٹی کمشنر نے تمام اے ای اوز کو ہدایت کی کہ حکومت نے جو ذمہ داریاں اور اختیارات تفویض کیے ہیں انہیں اداروں کی بہتری کے لئے استعمال کریں ۔انہوں نے کہا کہ ناقص کارکردگی کی حامل سکول کونسلز کو تحلیل کرتے ہوئے فعال لوگوں پر مشتمل سکول کونسلز تشکیل دی جائیں اور سکولوں میں موجود نان سیلری فنڈز کو بنیادی سہولیات کی فراہمی کے لئے استعمال کیا جائے، انہوں نے ہدایت کی کہ اے ای اوز سکولوں کو فراہم کئے جانے والے فنڈز کا آڈٹ کریں فنڈز کے استعمال بارے وہ ذمہ دار ہیں۔انہوں نے کہا کہ سکولوں کے دورہ کے دوران درپیش مسائل بارے فوری طور پر متعلقہ افسرکو آگاہ کریں۔انہوں نے ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر کو ہدایت کی کہ وہ ضلع میں کلاس فور کی رہ جانے والی بھرتیوں بارے سپیشل کیس تیا کریں تاکہ اسے متعلقہ فورم پر بھجوا کر کلاس فور کی کمی کو دور کیا جا سکے۔انہوں نے سی ای او ایجوکیشن اتھارٹی کو ہدایت کی کہ وہ ہر تحصیل سے ناقص اور بہتر کارکردگی کے حامل پانچ خواتین اور پانچ مرد اے ای اوزکو کارکردگی کی بنیاد پر ہر ماہ منتخب کریں بہتر کارکردگی کے حامل کو انعامات و سرٹیفکیٹس جبکہ ناقص کارکردگی کے حامل کو سزائیں دی جائیں گی۔انہوں نے کہا کہ ان اے ای اوز کا چنائو میرٹ پر کارکردگی کی بنیاد پر کیا جائے اور آئندہ اجلاس میں ہر اے ای اوز کی کارکردگی بارے بریفنگ دی جائے۔

رحیم یار خان:ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر نے کہا ہے کہ زراعت کی ترقی اور کسانوں کی معاشی خوشحالی حکومت پنجاب کی اہم ترجیح ہے اور چھوٹے زمینداروں کو بلا سود قرضوں کی فراہمی، جدید زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال کی حوصلہ افزائی کے لئے فراخدلانہ سبسڈی اور زرعی آلات کی شفاف اور منصفانہ تقسیم کے ذریعے کم پیداواری لاگت کے ساتھ زیادہ فصل حاصل کرنے کے لئے محکمہ زراعت تمام ممکنہ اقدامات اور وسائل استعمال کر رہا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ ایگریکلچر ایڈوائزری اور ٹاسک فورس کمیٹی کے مشترکہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔اجلاس میں ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت رائو اشفاق احمد، ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو سٹاک ڈاکٹر سید سبطین شاہ، اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت رانا منصور علی، کسان تنظیموں کے رہنما چوہدری محمد یسین، جام ایم ڈی گانگا، جام اللہ نواز مانک، چوہدری ناصر جمیل سمیت دیگر موجو دتھے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(جنرل)شیخ محمد طاہر نے کہا کہ بلاشبہ زراعت ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور متعلقہ محکموں کی ذمہ داری ہے کہ وہ کسانوں کے حقوق کا تحفظ یقینی بناتے ہوئے جعلی زرعی ادویات اور کھادیں فروخت کرنے والوں کے خلاف بلا امتیاز اور ٹھوس کاروائی کریں۔انہوں نے کہا کہ ایسے عناصر کے خلاف مقدمات کے اندراج اور عدالتوں میں کیسز کی موثر پیروی کی جائیں ۔انہوں نے کہا کہ لائیو سٹاک کو بھی ضلع میں امتیازی مقام حاصل ہے اس شعبہ کی بہتری اور حکومت مراعات سے فائدہ اٹھانے کے لئے ڈپٹی ڈائریکٹر لائیو سٹاک مزید بہتر
انداز سے محکمانہ کاوشوں کو بروئے کار لائیں۔اجلاس میں کاشتکار تنظیموں کے نمائندوں نے مختلف مسائل کی نشاندہی کرتے ہوئے اس کے فوری حل کی ضرورت پر زور دیا۔

rahiim yar khan news ramzan bazar

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »