حکمران کسانوں سے کیے گئے وعدے پورے نہیں کر رہے,جام ایم ڈی گانگا

rahim yar khan kissan ittehad

رحیم یار خان. پاکستان کسان اتحاد کے ڈسٹرکٹ آرگنائزر جام ایم ڈی گانگا نے سابق ناظم کوٹلہ پٹھان سردار محمد ارشد جتوئی،پاکستان سرائیکی قومی اتحاد کے مرکزی جنرل سیکرٹری حاجی نذیر احمد کٹپال اور جام احمد زبیر شکوری سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اصل حقداروں کو محروم کرکے روہی چولستان کی زمینوں پر مختلف طریقوں سے قبضے کرنے والے اب نہری پانی کو ڈکیتیوں کے بعد باقاعدہ زمینوں کی طرح ہتھیانے جا رہے ہیں.حکمران کسانوں سے کیے گئے وعدے پورے نہیں کر رہے. زرعی پالیسیوں کو قومی زراعت اور کسان دوست بنایا جائے. قومی، صوبائی اور اضلاع کی سطح تک نہری پانی کی کل رقبے اور کاشتہ رقبے کو مدنظر رکھتے ہوئے از سرے نو تقسیم کی جائے.سو فیصد زمینیں آباد ہو چکی ہیں. ششماہی نہروں کا پانی حصہ بڑھایا جائے. اربوں روپے کا قیمتی زرمبادلہ دینے والے باغات ان علاقوں میں ہیں. باغات کے لیے مطلوبہ پانی نہیں دیا جا رہا.سردار ارشد خان جتوئی اور جام احمد زبیر نے کہاکہ ہمارے ہاں زیادہ پیداوار آنے پر کسانوں کو انعام کی بجائے سزا دی جاتی ہے. کسانوں کی فصلات کا تحفظ اور سرکاری ریٹس کی فراہمی کو یقینی بنایا جائے. گندم کی سرکاری خریداری کا ہدف بڑھایا جائے. حاجی نذیر احمد کٹپال نے کہاکہ ضیاء الحق کےدور میں کچے کے کسانوں کے نہری پانی پر ڈاکہ ڈالا گیا تھا جس کا خمیازہ اب تک لوگ بھگت رہے ہیں. گذشتہ سال ششماہی نہروں کو بمشکل تین مہینے پانی ملا.اب کچھ نئی وارداتیں ہونے جا رہی ہیں.  پکے کے کاشتکاروں کی طرح کچے کے کاشتکاروں کو اپنے نہری پانی کے تحفظ کے لیے جاگنا ہوگا. ورنہ پہلے ریکارڈ میں پانی چوری ہو جائے گا اور بعد ازاں موقع پر پانی ڈکیتیاں پڑیں گی.ضلع رحیم یار خان کا نہری پانی کا کوٹہ بڑھانے کی بجائے کم کرنے کی سکیمیں علاقے کو بنجر کرنے کی سازش ہیں.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »