fbpx

نئے پاکستان میں بھی پرانے کھیل جاری

rahim yar khan News Sugar Prices increase price

رحیم یارخان:نئے پاکستان میں بھی پرانے کھیل جاری ، شوگر ملز مافیا ایک مرتبہ پھر عوام کی جیبوں پرڈاکہ مارنے پر تل گیا،کھیتوں سے گنا ختم ہوتے ہی چینی کی قیمتوں کو پر لگ گئے،شوگر سیزن کے آغاز پر 50روپے کلو فروخت ہونے والی چینی کی قیمت شوگر سیزن ختم ہونے کے چند ہفتوں بعد ہی 65روپے فی کلو ہوگئی،پرائس کنٹرول کمیٹیاں غیر فعال،دور دراز دیہات میں چینی کا ریٹ 70روپے کلو تک پہنچ گیا ہے ،
کاشتکاروں کے گنے کا ریٹ پانچ سال سے مسلسل 180روپے فی چالیس کلوگرام ہے ، ڈالر کی قیمت بڑھے یا ڈیزل ، پیٹرول اور بجلی ، کھاد مہنگی ہوجائے ، گنے کی قیمت نہیں بڑھائی جاتی ، لیکن چینی کی قیمت کو پر لگ جاتے ہیں ، حالیہ شوگر سیزن کے آغاز پرملک بھر میں چینی کی قیمت 50روپے کلو تھی،،کھیتوں سے گنا ختم ہوتے ہی چینی کی قیمت نے 60روپے پر جمپ مارا اور اب 65روپے فی کلوپرفروخت ہونے لگی ہے،
،شوگر مارکیٹ ذرائع کے مطابق رمضان المبارک میں چینی 75روپے کلو بیچنے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں،اس افسوسناک صورتحال کا ایک اہم پہلو یہ ہے کہ نئے پاکستان میں بھی شوگر مافیا کا راج ہے اور ڈسٹرکٹ پرائس کنٹرول کمیٹیاں خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہیں۔ دیہات میں اس وقت چینی کی قیمت 70روپے فی کلو تک جا پہنچی ہے،،شہریوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے اپیل کی ہے کہ وہ ملک میں چینی کی قیمت میں کارٹل بنا کر خود ساختہ اضافے کا نوٹس لیں اور شوگر ایکسپورٹ فوری بند کرکے اپنے ملک کے عوام کو سستی چینی فراہم کی جائے، کاشتکاروں کی مختلف تنظیموں کے رہنمائوں لشکر خان کورائی ، شاہد اقبال چوہدری ، میاں شہزاد ثمر، میاں فیصل ودیگر نے کہا ہے کہ کاشتکاروں سے انتہائی سستا گنا خرید کر اب انہیں انتہائی مہنگی چینی بیچی جا رہی ہے، ضلعی انتظامیہ خاموش تماشائی ہے ، دیہات میں جس دوکاندار کا جو جی چاہتا ہے اسی قیمت پر چینی بیچنے لگ جاتا ہے ، کاشتکار رہنمائوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ چینی کی ایکسپورٹ کی آڑ میں قیمتوں میںاس مصنوعی اضافے کا فوری نوٹس لیا جائے اور قیمت واپس پچاس روپے فی کلو پر لائی جائے ۔

rahim yar khan News Sugar Prices increase price

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »