سکیورٹی کو ضابطہ کے مطابق فعال نہ رکھنے والوں کے خلاف کاروائی ہوگی

رحیم یارخان سکیورٹی کو ضابطہ کے مطابق فعال نہ رکھنے والے بنکس، مالیاتی و تعلیمی اداروں کے خلاف ضابطہ کارروائی ہوگی۔
سنوکر و بلیئرڈ کلبز می اٹھارہ سال سے کم عمر نوجوانوں اور طلبہ کا داخلہ ممنوع خلاف ورزی پر مقدمات درج کئے جائیں گے۔
 ڈی ایس پی سٹی سرکل جاوید اختر جتوئی نے سٹی سرکل سے تعلق رکھنیت والے تمام بنکس، تعلیمی اداروں کے سربراہان و نمائندوں اور سنوکر و بلیئرڈ کلب ہولڈز سے ایک اہم میٹگ کی جس میں انہوں نے بنک اور تعلیمی اداروں کے ذمہ داروں سے کہا کہ وہ اپنے اداروں کی سکیورٹی طے شدہ اور مروجہ قوانین کے مطابق یقینی بنائیں تاکہ کسی بھی شرپسند اور جرائم پیشہ عناصر کو ان میں کسی قسم کی واردات کا موقع نہ مل سکے اور نہ ہی کوئی نقصان اٹھانا پڑے انہوں نے کہا کہ اس سلسلہ میں کسی قسم کی کوتاہی سامنے آئے انہوں نے کہا کہ 2015 سے سکیورٹی ایکٹ پر عملدرآمد کے لیے بیسیوں میٹنگ ہو چکی ہیں اور اگر آج تک بھی کسی ادارے نے سکیورٹی انتظامات ضابطہ کے مطابق نہیں کئے ہیں تو یہ ایک لمحہ فکریہ ہے اب وہ اور ایس ایچ اوز سٹی سرکل اس سلسلہ میں کارروائی کا آغاز کر رہے ہیں اور چیکنگ کے دوران کوئی بھی بہانہ نہیں سنیں گے اور قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
انہوں نے اس موقع پر سنوکر اور بلیئرڈ کلبز ہولڈرز کو کہا کہ وہ اپنے کلبز میں اٹھارہ سال سے کم عمر نوجوانوں کو ہرگز کھیلنے کا موقع نہ دیں کلبز میں نشہ کا استعمال کسی صورت نہ ہونے دیں اور نہ ہی طلبہ کو کلبز میں کھیلنے کا موقع دیں سکول و کالج کے اوقات میں بھی اٹھارہ سال سے بڑی عمر کے طلبہ کو کلبز میں داخل نہ ہونے دیں اگر کسی قسم کی خلاف ورزی پائی گئی تو کلب ہولڈر کے خلاف مقدمہ درج ہو گا اور اسے جیل بھیجا جائے گا۔ انہوں نے کہا آج آپ لوگوں کو بلا کر حجت تمام کر دی گئی ہے اب صرف کارروائی ہوگی۔

                              

ڈی ایس پی پٹرولنگ پولیس فرحت حمید قریشی
ڈی ایس پی پٹرولنگ پولیس فرحت حمید قریشی

ڈی ایس پی پٹرولنگ پولیس فرحت حمید قریشی نے کہا ہے کہ اہلکار فرائض کی ادائیگی کے ساتھ اپنی فزیکل فٹنس کو یقینی بنائیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پل ڈگہ پٹرولنگ پوسٹ پت تعینات اہلکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، محترمہ فرحت حمید قریشی کو پل ڈگہ پہنچنے پر اہلکاروں کے چاک و چوبند دستے نے سلامی پیش کی۔ ڈی ایس پی نے پوسٹ کے تمام حصوں کو دورہ کیا اور اس موقع پر صفائی اور ریکارڈ کا جائزہ لیا۔ انہوں نے اہلکاروں سے کہا کہ وہ ڈیوٹی اوقات کے بعد اپنی فزیکل فٹنس کے لیے ضرور وقت نکالیں تاکہ ان کی صحت بہتر رہے اور وہ اپنے فرائض کی ادائیگی احسن انداز میں نبھا سکیں۔ انہوں نے اہلکاروں کے مسائل سنے اور ان کے حل کی یقین دھانی کراتے ہوئے کہا کہ آپ کی ویلفئر کا خیال رکھنا ان کی ذمہ داری ہے اور آپ لوگوں کا کام ہے کہ ایس او پی کے مطابق اپنے فرائض کی ادئیگی یقینی بنائیں۔
                                           

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close