سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کا دورہ کراچی

رپورٹ: سعید احمد پہوڑ

سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے چیئرمین جام اظہرمراد لاڑ کا دورہ کراچی  مرکزی سیکریٹری اطلاعات،

سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کسی بھی مشن کی تکمیل کیلئے جماعتی جدوجہد کلیدی کردار ادا کرتی ہے،

وہ جماعتیں یا تنظیمیں اس وقت تک کامیاب نہیں ہوتیں جب تک ان کی تنظیمیں سازی نہ ہو اور تنظیم کے پلیٹ فارم سے ایکٹویٹی نہ ہوں،سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے قیام کو عرصہ تین سال ہورہے ہیں،

سرائیکی فاؤنڈیشن کے قیام سے لیکراب تک گراس روٹ لیول پر پورے وسیب میں کام ہورہا ہے،

وسیب کے علاوہ سرائیکی فاؤنڈیشن نے سندھ بالخصوص کراچی میں تنظیم سازی اور سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز کردیا ہے اور اس سلسلے میں سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے چیئرمین جام اظہرمراد لاڑ،سیکریٹری جنرل مقصود کھوکھر،سیکریٹری اطلاعات سعید احمد پہوڑ نے سرائیکی فاؤنڈیشن سندھ کے صوبائی صدر محمد عباس شاہ کی دعوت پر خصوصی دورہ کیا۔

سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے چیئرمین جام اظہرمراد لاڑ کا دورہ کراچی کے دوران سرائیکی فاؤنڈیشن سندھ کے عہدیدران کونوٹیفکیشن کی تقریب میں شرکت کے علاوہ سرائیکی قومی اتحاد کے سربراہ کرنل عبدالجبار عباسی سے ملاقات کی اور صوبہ کی جدوجہد تیز کرنے کا عزم کیا۔

وسیب ویلفیئرفاؤنڈیشن کے چیئرمین حاجی جمیل ولیانی کے ظہرانے میں شرکت،شاہ زیب کے ورثاء سے اظہار تعزیت،اخبارات اور ٹی وی چینل کے پروگراموں میں بھی شریک ہوئے،

جام اظہرمراد لاڑ نے سرائیکی فاؤنڈیشن سندھ کے زیراہتمام مشاورتی کٹھ ”سچی سانجھ وسیب دی“تقریب کی صدارت کی،اعلان کراچی اور سرائیکی تحریک کو آگے بڑھانے کیلئے تجاویز پیش کئیں جن کو سراہا گیا،

اس موقع پر سرائیکی فاؤنڈیشن کے چیئرمین جام اظہرمراد،پاکستان سرائیکی قومی اتحادکے چیئرمین کرنل (ر) عبدالجبارخان عباسی،ہمدرد سرائیکی پارٹی کے سربراہ ملک رحمت اللہ،پاکستان سرائیکی پارٹی کے صوبائی صدر سید شفقت شاہ بخاری،سرائیکی عوامی اتحاد کے چیئرمین ملک فیصل کھرل،سرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی کے مرکزی نائب صدر ملک انور بھٹہ،سرائیکی ادبی سنگت کے رہنما شہاب اویسی،خواجہ فرید ویلفیئر ٹرسٹ کے صدر مخدوم سید اکبر شاہ،سرائیکی فاؤنڈیشن کے صوبائی صدر محمد عباس شاہ،وسیب ویلفیئر فاؤنڈیشن کے صدر جمیل خان ولیانی،لیاقت خان ایڈووکیٹ سمیت دیگر مقررین نے اپنے خطابات میں کہا کہ سرائیکی تحریک حقوق کی بازیابی کے لئے دُنیا کی پرامن تحریکوں میں سے ایک ہے،

سرائیکی صوبے کا قیام پاکستان کے استحکام کی ضمانت ہے،صوبہ بننے سے پاکستان مستحکم اورباقی صوبوں کے درمیان آبادی کیعدم توازن کا خاتمہ ہوگا،

پنجاب کی آبادی 72فی صد اور باقی صوبوں کی آبادی 38فیصد حقوق کے نام پر ڈاکہ ہے،سرائیکی صوبہ بننے سے سندھ،بلوچستان،خیبر پختونخواہ کا احساس محرومی ختم ہوگا۔مشاورتی کٹھ میں متفقہ طور پر یہ قرار دادیں بھی پاس کی گئیں۔

فوری طور پر صوبہ کمیشن تشکیل دیکر 23اضلاع پر مشتمل پنجاب کو تقسیم کرکے صوبہ سرائیکستان بنایا جائے،سندھ میں قتل ہونے والی سندھ کی بیٹی نمرتا اور کراچی میں قتل ہونے والی سرائیکی وسیب کی بیٹی فضہ یسیٰن کے قاتلوں کو منظر عام پر لاکر کڑی سے کڑی سزا دی جائے،خیبر پختوانخواہ کی طرح سرائیکی وسیب میں سرائیکی اور باقی تمام علاقوں میں مادری زبان میں تعلیم دی جائے،

ملک بھر بالخصوص سرائیکی وسیب میں رہنے والی تمام اقلیتوں ہندو،عیسائی ودیگر کو سکھ اقلیت کی طرح سماجی،معاشرتی اور مذہبی آزادی وتحفظ فراہم کیا جائے، گھوٹکی سندھ میں متاثرہ ہندو ٹیچر کومعاشی،سماجی،معاشرتی اور مذہبی تحفظ ریاست کی اولین ذمہ داری ہے۔

حکمران فوری طور پر وسیب کے لیے الگ سیکریٹریٹ قیام،الگ فنانس،این ایف سی ایوارڈ،فوج میں الگ سرائیکی رجمنٹ بنانے کا اعلان کریں۔سرائیکی ایکٹویسٹ احمد مصطفی کانجو کو رہا کیا جائے،سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے سیکریٹری جنرل مقصود کھوکھر،مرکزی سیکریٹری اطلاعات سعید احمد پہوڑ،صدر کراچی عبدالحمید ازاد،عاقب جاوید کھوکھر،مختیار ججوی،جام شاکر نے اپنے خطاب میں مزید کہاکہ سرائیکی صوبہ اٹل حقیقت ہے انشاء اللہ اب صوبہ بن کر رہے گا،مشاورتی کٹھ میں سرائیکی قائدین نے سرائیکی صوبہ کیلئے ملکر جدوجہد کرنے کا عزم کیا۔

اس موقع پر نازک جتوئی،شہاب اویسی،حاجی ربنواز خان،اختر شاہین رند،احسن جتوئی،خالد ڈاہا،بلال گھوٹیہ سرائیکی،عاقب جاوید کھوکھر،افضل سرائیکی،سردار شوکت خان علیانی،مختیار حسین،ارشد لاشاری،قاری اللہ بخش طاہر،طارق فریدی،اکبر ملک،ایوب جوئیہ،خضر ریاض،بلال جتوئی سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

دورے کے تیسرے روز سرائیکی فاؤنڈیشن سندھ کے صدر محمد عباس شاہ کی دعوت لنچ،مرکزی سیکریٹری اطلاعات سعید احمد پہوڑ کے عصرانے،سرائیکی فاؤنڈیشن کراچی کے صدر عبدالحمید آزاد کے ٹی پارٹی میں شریک ہوئے،

دورے کے دوران پاکستان فلاح پارٹی کے عہدیدران سے ملاقات،سٹوڈنٹ رہنما چوہدری حسنین جاوید کے عشائیے میں بھی شریک ہوئے،معروف صحافی قادر ضیاء سے ملاقات اس موقع پر انہیں سرائیکی اجرک کا تحفہ پیش کیا۔سرائیکی فاؤنڈیشن کے چیئرمین جام اظہرمراد لاڑ مشاورتی کٹھ میں جو تجاویز پیش کی ہیں وہ یہ ہیں۔

تجاویز،”سچی سانجھ وسیب دی“100دنوں میں صوبہ بنانے والی حکومت نے ایک سال سے بھی زائد عرصہ گزار دیا ہے لیکن سرائیکی جماعتوں کی طرف سے کوئی موثر احتجاج نہیں کیا گیا،سرائیکی تحریک کے پلیٹ فارم سے فی الفور آل سرائیکی پارٹیز بلا کر احتجاج کا لائحہ عمل دیا جائے،

سرائیکی تحریک کو عالمی سطح پر منظم کیا جائے،رابطے تیز کیے جائیں،تنظیمی سیٹ اپ کو فعال بنایا جائے،اس حوالے سے سرائیکی جماعتوں کو کردار ادا کرنا چاہیے،

وسیب ہاؤس ملتان کی طرز پر سرائیکی بنیاد پر کراچی میں بھی وسیب ہاؤس یا سرائیکیتان ہاؤس بنایا جائے جس میں وسیب سے آنے والے لوگوں اور کراچی میں رہائش پذیر سرائیکی آبادی کے مسائل کے حل،ثقافتی سرگرمیں کے فروغ کے علاوہ تحریک کابیس مرکز ہو،

کراچی میں رہائش پذیر سرائیکی،سرائیکی جھنڈا،نقشہ صوبہ سرائیکستان اپنے گھروں،دفتروں،گاڑیوں،اور بیٹھکوں میں لازمی لگائیں،موجودہ دور الیکٹرونک میڈیاکاا دورہے،الیکٹرونک میڈیامیں سرائیکی وسیب کو نظر انداز کیا جاتا ہے،

سرائیکی وسیب میں ہونے والے ظلم اور ستم کونہیں دکھایا جاتا،نہ ہی وسیب کی  ثقافت،تہذیب اور ادب کو فروغ دیا جاتا ہے،اس لیے سرائیکی ٹی وی چینل کاقیام بہت ضروری ہے،میڈیامیں کام کرنے والے سرائیکی ٹی وی چینل کے قیام کیلئے عملی اقدامات اُٹھائیں،خواجہ فریدکادیوان ہر گھرمیں ہونا چاہیے اور بلخصوص عورتوں کو دیوان فرید ؒ لازمی پڑھایاجائے تاکہ سرائیکی نظریہ مضبوط ہو،

سرائیکی اجرک اور فریدی روما ل کو فروغ دیا جائے،یہ وسیب کی اہم علامت ہیں،فیکٹریاں میں کام کرنے والے وسیب دے لوگیں دی  یونین کومنظم کیا جائے اوراُن کے حقوق کی جنگ لڑی جائے،تحریک کومنظم کرنے کیلئے سرائیکی نظریہ کے فروغ کیلے ارشاد امین کی ادارات میں شائع ہونے والے رسالے ”پارات“کو ہر سرائیکی لازمی لیکر لازمی پڑھے،

کراچی سے ادبی،سماجی رسالے باقاعدہ جاری کیے جائیں،۔اور سرائیکیوں کا ہفتہ روزہ یا پندرہ روزہ اورروزنامہ اخبار نکالنے کیلئے عملی اقدام کی ضرورت ہے،

کراچی میں رہائش پذیر جگی واس اور گھروں میں کام کرنے والوں کا سروئے کروایا جائے تاکہ اُن کے باعز ت روزگار کیلئے عملی اقدام کیے جائیں۔

کراچی میں رہنے والے سرائیکیوں کے مسائل کے حل اور ان تجاویز کو عملی جامہ پہنانے کیلئے سرائیکستان تھنکرز فور،سرائیکستان نظریہ فاؤنڈیشن،سرائیکستان نظریہ ٹرسٹ یا کسی اور نام سے فورم بنایا جائے جس میں ادیب،دانشور،گلورکار،شاعر سمیت ہر مکتبہ فکر کے لوگ شامل ہوں،

سرائیکی فاؤنڈیشن پاکستان کے چیئرمین جام اظہرمراد لاڑ کا کراچی میں تین دن کا دورہ انتہائی کامیاب رہا،دورے کی خاص بات یہ ہے کہ سوشل میڈیا میں پروگراموں اور ملاقاتوں کی دھوم مچی ہوئی تھی،

آخر میں اس بات کا اعتراف بہت ضروری اور فرض ہے کہ دورے کو کامیاب بنانے میں صوبائی صدر سرائیکی فاؤنڈیشن سندھ محمد عباس شاہ کی محنت اور لگن قابل تعریف ہے۔امید ہے جام اظہرمراد کا یہ دورہ تحریک کو آگے بڑھانے میں مدد گار ثابت ہوگا۔نوٹ فوٹو ہمراہ ہیں۔شکریہ 

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close