fbpx

جام اعظم انیس نے ایس ای کالج کے پروفیسر کے بہیمانہ قتل کے واقعہ پر شدید ردعمل کر اظہار کیا

SE College Bahawalpur

رحیم یارخان (ڈسٹرکٹ رپورٹر) مرکزی ممبر سنٹرل کمیٹی پاکستان پیپلز پارٹی شہید بھٹو جام اعظم انیس نے ایس ای کالج کے پروفیسر کے بہیمانہ قتل کے واقعہ پر شدید ردعمل کر اظہار اور مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت خود اور حکمرانوں کا ایک طبقہ روشن خیالی برداشت نہیں کرتا ،جاگیردار انہ نظام اور عوام کو سیاسی ومذہبی جنونی جمودی رجعت پسند قوتوں کی غلامی سے آزاد کرائے بغیر ملک میں روشن خیالی کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا، ترقی پسند وسماجی تنظیموں ،کالجوں کی ایسوسی ایشنز ،روشن خیال سیاسی کارکنوں اور سول سوسائٹی کی خاموشی ایک سوالیہ نشان ہے۔ جاگیردارانہ اور قبائلی معاشرہ میں عوام سیاسی، معاشی،معاشرتی اور مذہبی جنونیت طبقہ کے شکنجے میں بری طرح جکڑے ہوئے ہیں، معاشرہ بری طرح تباہ و برباد ہوچکاہے ،نہ ملک روشن خیال ہے اور نہ ہی ملک کے حکمران اشرافیہ روشن خیا ل قوتوں کو برداشت کرتی ہے۔ اب پاکستان میں کمال اتاترک کی ضرور ت ہے اور قوم شدت سے منتظر ہے۔انہوںنے کہاکہ درسگاہوں میں دہشت گردی افسوسناک ہے پروفیسر خالد روشن خیال اور شفیق ،انسان دوست تھے ،اسکے قتل پر کالجوں کی پروفیسرز ایسوسی ایشن کی جانب سے احتجاج کے لیے باہر نہ نکلنا بھی لمحہ فکریہ ہے جبکہ یونیورسٹیوں میں خواتین اساتذہ بھی جمودی قوتوں سے خوف زدہ ہیں۔

SE College Bahawalpur

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close