نومسلم لڑکیوں کے نابالغ ہونے کا انکشاف

SENATE STANDING COMMITTEE

گھوٹکی: سندھ سے مبینہ طور پر اغوا ہونے والی لڑکیوں کی عمریں18سال سے کم ہیں۔ نادرا فیملی رجسٹریشن سرٹیفیکیٹ کے مطابق روینا کی عمر پندرہ اور رینا کی تیرہ سال ہے۔
گزشتہ روز لڑکیوں نے اسلام قبول کرنے کے بعد پسند کی شادی کا وڈیو بیان دیا تھا۔ ڈپٹی کمشنر اور ایس ایس پی گھوٹکی نے بتایا ہے کہ خان پور سے نکاح خواں سمیت کئی افراد کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔
سینیٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی برائے داخلہ نے بھی سندھ سے لڑکیوں کے مبینہ اغوا پر نوٹس لے لیا ہے۔ کمیٹی نے دو ہفتے میں واقعہ کی تفصیلی رپورٹ طلب کی ہے۔

SENATE STANDING COMMITTEE ON INTERIOR
SENATE STANDING COMMITTEE ON INTERIOR

سندھ کے ضلع گھوٹکی سے لاپتہ ہونے والی لڑکیوں کا تاحال سراغ نہیں مل سکا۔ اہلخانہ کے مطابق لڑکیوں کو گھوٹکی سے پنجاب کے ضلع رحیم یار خان منتقل کیا گیا ہے۔
ادھر وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ دونوں لڑکیوں کی رحیم یار خان سے گوجرانوالہ پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔
وزیراعظم عمران خان نے بھی دونوں لڑکیوں کے مبینہ اغوا کا نوٹس لیتے ہوئے پنجاب اور سندھ حکومت کو ان کی بازیابی کی ہدایت کی تھی۔ وزیر ٹرانسپورٹ سندھ اویس شاہ نے بھی ہندو لڑکیوں کے اہل خانہ سے ملاقات کی تھی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »