fbpx

احساس نشوونما پروگرام غذائی قلت کا شکار ماں اور بچوں کی صحت کے لئے مفید ثابت ہو گا

راجن پور24جولائی2020:پٹی کمشنر راجن پور ذوالفقار علی نے کہا ہے کہ احساس نشوونما پروگرام غذائی قلت کا شکار ماں اور بچوں کی صحت کے لئے مفید ثابت ہو گا۔ راجن پور میں پاکستان کے پہلے چار احساس نشوونما مراکز قائم کیے جا رہے ہیں۔
ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ مال نیوٹریشن ایڈریسنگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرعالمی ادادہ صحت سے سلمیٰ یعقوب اور ڈسٹرکٹ کوارڈنیٹر تنزیل الرحمان علوی نے احساس نشوو نما مرکز کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔
انہوں نے بتایا کہ راجن پور میں پاکستان کے پہلے چار احساس نشوونما مراکز قائم کیے جا رہے ہیں۔ یہ مراکز تحصیل ہیڈ کوارٹر جام پور، روجھان، ڈی ایچ کیو راجن پور اور سول ہسپتال شاہوالی میں قائم کیے جا رہے ہیں۔
جس سے راجن پور میں تقریباً 50ہزار حاملہ خواتین اور 30ہزار غذائی قلت کے شکار بچوں کو امدادی رقم کے ساتھ ساتھ خوراک کے پیکٹ بھی دئیے جائیں گے۔
سلمیٰ یعقوب نے شرکا کو آگاہ کیا کہ جام پور میں بننے والا پاکستان کا پہلا مرکز ایک ماڈل کی صورت اختیار کر گیا ہے۔ جسے وزیراعظم پاکستان کو ایک ماڈل کے طور پر پیش کیا گیا ہے۔ جس کا سارا سہراہ ڈپٹی کمشنر راجن پور ذوالفقار علی، اسسٹنٹ کمشنر جام پور سیف الرحمان ، سی ای او ہیلتھ، ڈاکٹر محبت علی، ایم ایس ٹی ایچ کیو جام پور ڈاکٹر احمد ندیم اور ڈی سی ایم ایس این سی تنزیل علوی کو جاتا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ ان مراکز کا افتتاح وزیراعظم ویڈیو لنک کے ذریعے اگست کے پہلے ہفتے میں کریں گے۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ سماجی تنظیم دوآبہ کے تعاون ہیلتھ یونٹ جہان پور اور نور پور میں دو واٹر فلٹریشن پلانٹس لگانے کا بھی فیصلہ کیا گیا-
ڈپٹی کمشنر نے ہدایت کی کہ ان پلانٹس کو سولر انرجی پر لگوائیں تاکہ اس کو دیر پا استعمال کیا جا سکے۔ اجلاس میں 5سرکاری سکولوں میں ڈے کئیر سنٹرز بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اجلاس میں سی ای او ایجوکیشن ثنا اللہ سہرانی، ایکسین پبلک ہیلتھ عامر رند، ڈپٹی ڈائریکٹر پنجاب فوڈ اتھارٹی نعمان احمد اور دیگر ضلعی آفسیران نے شرکت کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close