شہداء نیوزیلینڈ کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے دعائیہ تقریب کا انعقاد ۔

Solidarity New Zealand Muslims Rahim Yar khan 

نیوزیلینڈ کی مساجد میں نماز جمعہ کے اجتماعات کے موقع پر آسٹریلین دہشت گرد کے ہاتھوں 50 مسلمانوں کی شہادت جس میں 9 پاکستانی بھی شامل ہیں اور درجنوں مسلمانوں کے زخمی ہونے پر جہاں پر ہر مکتبہ فکر سوز گوار وہاں پر رحیم یار خان پولیس کی جانب سے بھی اس سانحہ پر اپنے جذبات کا اظہار کرنے کے لیے ایک دعائیہ تقریب کا انعقاد کیا گیا ۔ یہ تقریب دعا چوک نزد جی پی او منعقد ہوئی جس میں جہاں پر ڈی پی او عمر سلامت ، ایس پی انوسٹی گیشن رانا محمد اشرف ، ڈی ایس پی سٹی عباس اختر ، ایس ایچ اوز اے ڈویژن اظہر اقبال ، بی ڈویژن محمد یسین ، ائیر پورٹ یعقوب عباسی ، سی ڈویژن محمود خان ، آب حیات ملک منظور احمد اور ایس ایچ او تھانہ صدر رحیم یارخان صفدر اقبال سندھو ، اسسٹنٹ سب انسپکٹرز ظہیر الدین بابر ، محمد آصف ، ٹریفک سارجنٹ سب انسپکٹر ریاض احمد سمیت پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد نے شرکت کی وہاں دفاع پاکستان فورم کے عہدیداران صدر حاجی خادم حیسن ، چیف آرگنائزر میاں محمد آصف لنگراہ ، نائب صدر چوہدری محمد بوٹا طاہر ، عمر منیر ، آصف ستار نے اپنے وفد کے ہمراہ شریک ہوئے جبکہ پریس کلب کے صدر میاں احسان ریشم کی قیادت میں پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا سے تعلق رکھنے والے تمام اراکین نے تقریب میں خصوصی شرکت کی ۔ اس موقع پر شرکاء نے پولیس کی جانب سے شہداء کے پینا فلکس کے سامنے شمعیں روشن کیں ، گلدست اور پھول رکھے اور آخر میں اجتماعی طور پر فاتحہ خوانی کر کے شہداء کی بلندی درجات ، زخمیوں کی صحت یابی اور ان کے ورثاء کے لیے صبر جمیل کی دعا کی ۔ اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی پی او عمر سلامت نے کہا کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں یہ ناقابل فراموش اور انسانیت سوز واقع ہے جس نے دنیا کے درودیوار ہلا کر رکھ دئیے اور پر امن ممالک اور مذاہب کو چونکا کر رکھ دیا ہے ۔ ہمارے مذہب اور ملک میں اقلیتوں کے حقوق مقرر ہیں جو کہ پوری طرح انہیں حاصل ہیں اور ہم ان کے محافظ ہیں انہوں نے کہا کہ ہم اس مذہب سے تعلق رکھتے ہیں جس نے ہمسائے کے حقوق بتاتے ہوئے کسی مذہب کا ذکر نہیں کیا بلکہ اس کا ہم پر حق رکھ دیا ہے جو کہ ہمارے مذہب کے پر امن ہونے کی دلیل ہے انہوں نے کہا کہ ہمیں اس موقع پر پورے صبر و تحمل اور ذمہ داری کا ثبوت دینا ہے کیونکہ ہم پاکستانیوں نے دہشت گردی کا سامنا کیا اور اسے شکست دینے کے لیے جہاں پر پاک افواج ، پولیس ، رینجرز سمیت تمام قانون نافذ کرنے والے اداروں نے قربانیاں دیں وہاں سول سوسائٹی اور عام عوام نے بھی ناقابل تلافی نقصان کا سامنا کیا ہے ۔ ہمیں اپنی صفوں میں بلا امتیاز اتحاد برقرار رکھنا ہے جس میں مذہبی ، لسانی اور رنگ و نسل کی تفریق نہ ہو ۔
Solidarity New Zealand Muslims Rahim Yar khan

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close