رحیم یارخان

رحیم یارخان چولستا ن کو ٹڈی دل نے اپنی لپیٹ میں لے لیا

بھارت سے ٹڈی دل کی بڑی تعداد میں پاکستان میں داخل ہونے کے بعد پنجاب کےرحیم یارخان کے چولستان اور  ضلع بہاولنگر کی تحصیلوں فورٹ عباس اور منڈی یزمان سے ملحقہ بھارتی شہروں انوپ گارش، گھرسانا اورکاجو والا(راجھستان) سے بھی بڑی تعداد میں آنے والے ٹڈی دل نے پاکستان کے علاقے چولستان کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ ہمسایہ ملک بھارت کے صحرائے راجستھان کے راستے غول در غول آنے والی ٹڈی نے چولستان کی چراہگاہوں کو اجاڑنا شروع کردیا

ایم ڈی چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی رانا وسیم کا کہنا ہے کہ آنے والے دنوں میں  چولستان کے مزید علاقوں میں ٹڈی دل کے حملے کا خطرہ  ، اس  سے بچاو کے لیے چولستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی، محکمہ زراعت، پلانٹ پروٹیکشن وِنگ اور دیگر متعلقہ محکموں کی ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں

چیئرمین کاٹن جنرز فورم احسان الحق نے کا کہنا ہے کہ ابتدائی طور پراس حملے سے کپاس ودیگر فصلوں کو اب تک اگرچہ معمولی پیمانے پرنقصان پہنچا ہے لیکن اس بات کابھی خدشہ ہے کہ چولستان میں بارشوں کی صورت میں ریت میں موجود ٹڈی دل کی نسل میں  اضافہ ہوا ،
 پورے چولستان اور اس سے ملحقہ اضلاع رحیم یارخان، بہاولنگر اور بہاولپور میں کپاس اور دیگر فصلوں کو بڑا نقصان پہنچنے کیساتھ اس ٹڈی دل کا حملہ مزید شہروں تک بھی پھیل سکتا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button