fbpx

رحیم یارخان کا ایس ایچ او ٹمبر مافیا کا سرپرست بن گیا

رحیم یارخان:ایس ایچ او تھانہ کوٹ سبزل جام اعجاز لاڑ کی سرپرستی میں ٹمبر مافیا نے چک 199پی میں 5ایکڑ رقبہ پر کھڑے درختوں کا قتل عام کردیا۔

زمین کے وارثتی حق داران نے ایس ایچ او کی سرپرستی میں ان کی ملکیت رقبہ سے ڈرادھمکا کر درخت کٹوانے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعلی پنجاب،کمشنر بہاولپور،ڈپٹی کمشنر رحیم یارخان اورڈی پی او سے نوٹس لے کر درختوں کی کٹائی رکوانے اور ایس ایچ او کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

تھانہ کوٹ سبزل کے علاقہ چک199پی کے رہائشی عابد حسین نے میڈیا کو بتایا کہ چک 199پی میں ان کی کھاتہ نمبر61.62میں وراثتی زرعی اراضی ہے۔5ایکڑ پر درختوں کا ذخیرہ ہے،

یہ رقبہ ہمارے دادا نذیراحمد،بشیراحمد،عزیزاحمد،محمدشریف کے نام پر ہے اورانتقال وراث ہمارے پاس ہے،انہوں نے الزام عائد کیا کہ محمدحسین،صالح محمدکی اولاد میں سے راشد محمودولد شفقت محمودایس ایچ او تھانہ کوٹ سبزل اعجاز لاڑ سے ساز باز کرکے ہمارے رقبہ پر موجود درخت کٹوارہے ہیں اور ہمیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دی جارہی ہیں،

یہ رقبہ ہم نے بینک میں پلج کرارکھا ہے اور انتقال ہمارے نام ہے جس کے ہم قانونی وارث ہیں لیکن اس کے باوجود مخالف پارٹی پولیس کو بھاری رشوت دے کر ہمارے رقبہ پر کھڑے درختوں کو کٹوا رہی ہے،

رقبہ کی ملکیت کے حوالے سے سول کورٹ اور ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت سے کیس کا فیصلہ ہمارے حق میں آچکا ہے جبکہ سول ججز اور ریونیوبورڈ سے سٹے چل رہا ہے،

راشد محمود وغیرہ نے ہمارے خلاف 167/19کا مقدمہ درج کرایا تھا جس میں ہماری بہاولپور ہائی کورٹ سے ضمانتیں ہوچکی ہیں،

زمین کی ملکیت کے کاغذات اور ریونیو بورڈ بہاولپور کا سٹے دکھاتے ہوئے عابد حسین کنگ کا کہنا تھا کہ سٹے آرڈر کے باوجود ایس ایچ او اعجاز لاڑ کا کہنا ہے کہ وہ کسی سٹے آرڈر کو نہیں مانتے۔

اگر تم زمین پر گئے تو تمہارے خلاف مقدمہ بنا دوں گا۔انہوں نے الزام لگایا کہ ایس ایچ او جام اعجاز لاڑ ہماری مخالف پارٹی سے پیسے لے کر ان کی سائیڈ لے رہا ہے اور ہمیں پولیس کے ذریعے ڈرایا دھمکایا جارہا ہے۔

ایس ایچ او نے اپنی سرپرستی میں کھاتہ نمبر61سے قیمتی درخت کٹوادئیے ہیں۔ہمیں تھانے بلوا کر اراضی سے دستبردار ہونے کیلیے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ایس ایچ او کہتا ہے کہ رقبے سے درخت کاٹنے دو ورنہ تم پر مقدمہ بنا کر اندر کردوں گا،

عابد حسین نے وزیراعلی عثمان بزدار،کمشنر بہاولپور،ڈپٹی کمشنر علی شہزاد اور ڈی پی او منتظر مہدی سے اپیل کی ہے کہ ہمارے ساتھ انصاف کیا جائے۔رقبہ ہماری ملکیت ہےجس کا تمام ریکارڈ بھی موجود ہے،

مخالفین کوٹ سبزل پولیس کی سرپرستی میں ہمیں ہماری وارثتی اراضی پر جانے سے روک رہے ہیں اور ٹمبر مافیا کے ہاتھوں ہرے بھرے قیمتی درخت کٹوائے جارہے ہیں،

درختوں اور ہمیں تحفظ دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف حکومت گرین پاکستان پرگروام کے تحت شجرکاری کررہی ہے تو دوسری طرف کوٹ سبزل پولیس حکومت کے سرسبز پاکستان مہم کو ناکام بنانے کیلئے درختوں کا صفایا کرارہی ہے،ادھر ایس ایچ او کوٹ سبزل جام اعجاز لاڑ کا کہنا ہے کہ انہوں نے کل اتوار کو دونوں پارٹیوں کو تھانے بلوایا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »