fbpx

ٹی بی (تپ دق) (TB)(tuberculosis) سے آپ صحتیاب ہو جائیں گے

ٹی بی کے بارے میں حقائق Read PDF BOOK

”میرا خیال ہے کہ لوگوں کو ٹی بی کے بارے میں؛ مرض کی عالمات اوریہ کیسے منتقل ہوتا ہے اس بارے میں جاننا اہم ہے۔ بہت سارے افراداس وجہ سے ٹی بی سے خوفزدہ ہوتے ہیں کہ انہیں اس بارے میں کافی کممعلومات ہوتی ہے۔ اس مرض کے بارے میں جاننے کا بہتر ین طر یقہ یہہےکہ اس سے نمٹا جائے۔ معلومات طاقتور وسیلہ ہے۔“مرد، 55 سال
جب آپ ٹی بی کے بارے میں بنیادی معلومات جان لیں گے، اور آپ یہ جان لیں گے کہ یہ کیسے پھیلتاہے اور کس طرح اس کا عالج ہوتا ہے تو، آپ کو محفوظ تر ہونے کا احساس ہوگا۔ آپ دوسروں کو اسبارے میں بتانے اور ان سے اس پر گفتگو کرنے کے اہل بھی ہوسکیں گے۔ جب آپ کے گردو پیش موجودافرادکو ٹی بی کے بارے میں ز یادہ معلومات حاصل ہوجائے گی تو، انہیں اس مرض سے محفوظ تر ہونے کااحساس ہوگا۔ تحفظ کا احساس کرنے والے افراد ٹی بی میں مبتال افراد کے تئیں کافی معاون ہوسکتے ہیں۔اس باب میں آپ کو ٹی بی کے بارے میں حقائق اور مر یضوں کی جانب سے سواالت مع جوابات ملیں گے۔

ٹی بی کیا ہے؟ tuberculosis

ٹی بی ایک مرض ہے جو جراثیم کی وجہ سے ہوتا ہے۔ جراثیم چھوٹے، غیر مرئی نامیات ہوتے ہیں جو انسانکے جسم سمیت، ہر جگہ پائے جاتے ہیں۔ ز یادہ تر جراثیم غیر مضرت رساں، اور یہاں تک کہ مفید بھی ہوتےہیں۔ معدے میں پائے جانے والے جراثیم مفید جراثیم کی مثالوں میں شامل ہیں جو ہماری کھائی ہوئی غذاکو ہضم کرنے میں معاون ہوتے ہیںلیکن کچھ جراثیم مضرت رساں ہیں اور ایسے امراض کا باعث ہوسکتے ہیں جنہیں ہم انفیکشنز )تعدی(کہتے ہیں۔ ٹی بی کا باعث بننے والے جراثیم اسی قسم کے ہوتے ہیں۔ اگر جراثیم خود کو جسم کے اندر کسیحصے سے منسلک کردیتے اور افزوں ہوجاتے ہیں ، اور جسم بذات خود اس کے دفاع پر قادر نہیں ہوتا ہے،تو آپ کو ٹی بی کا مرض الحق ہوسکتا ہے۔پھیپھڑوں میں ٹی بی ہوجانا بہت ہی عام ہے، لیکن یہ آپ کے جسم کے دیگر حصوں )مثال کے طور پرکاسۂ سر، لمفی غدود، یا دماغ( میں بھی ہوسکتا ہے۔ٹی بی کا باعث بننے والے جراثیم کو مائکروبیکٹیر یم ٹیوبرکلوسس ]خردجرثومیاتی تپ دق)tuberculosis Mycobacterium )کہا جاتا ہے۔

آپ کو ٹی بی کا انفیکشن کس طرح ہوتا ہے

ٹی بی چھوٹے ذرات کے ذر یعہ جنہیں آپ دیکھ نہیں سکتے ہیں ہوا کی معرفت پھیلتا ہے۔ یہ ذراتٹی بی میں مبتال فرد کے ناک اور منھ سے آتے ہیں، اور جب وہ فرد بات کرتا، کھانستا یا چھینکتا ہےتو یہ ہوا میں شامل ہوجاتے ہیں۔ ٹی بی کے جراثیم انہیں میں سے بعض ذرات کے اندر ہوتے ہیں۔

جبکوئی اور فرد اسی ہوا میں سانس لیتا ہے تو، ٹی بی کے جراثیم والے کچھ ذرات اس کے جسم میں داخلہ وسکتے اور اس کے پھیپھڑے میں پہنچ سکتے ہیں۔

ٹی بی کے جراثیم سے متاثرہ افراد الزمی طور پر بیمار نہیں پڑتے ہیں۔ ایک انداز کے مطابق دنیا کی قر یب3/1 آبادی اپنے اجسام میں ٹی بی کے جراثیم کی حامل ہوتی ہے، لیکن ان میں سے صرف بعض میں ہییہ مرض فروغ پاتا ہے۔

کچھ متاثرہ افراد کے بیمار پڑجانے کی وجہ یہ ہے کہ ان کی مصئونیت کم ہوگئیہوتی ہے۔ مصئونیت کی کمی دیگر امراض، تناؤ موسم کے بدالؤ، ناقص تغذیہ، خوراک کی تبدیلی، یا دیگروجوہات کے سبب ہوسکتی ہے۔ کبھی کبھی ٹی بی کے جراثیم سے متاثر ہونے کے سالوں بعد جاکر یہمرض ظاہر ہوتا ہے۔آپ کو کیسے معلوم ہوتا ہے کہ آپ کو ٹی بی ہے؟
کوئی ایسا فرد جسے 3–2 ہفتے یا ز یادہ وقفے سے کھانسی ہے اسے پھیپھڑے میں ٹی بی ہوسکتا ہے۔

پھیپھڑے کے ٹی بی کی سب سے ز یادہ عمومی عالمات میں شامل ہیں:
سینے میں درد
کھانسنے کے وقت پھیپھڑوں کے اندرونی حصے سے بلغم، کبھی کبھی خون کے ساتھ خارج ہونا

ٹی بی – پھیپھڑے کا ٹی بی اور جسم کے دیگر حصوں میں ٹی بی دونوں – کی دیگر عمومی عالمات ہیں:
• بھوک کم ہوجانا
• وزن کم ہوجانا
• کمزور اور تھکا ہوا محسوس ہونا
• کچھ عرصے سے کھانسی ہونا
• رات میں پسینہ آنا
• گردن کے او پر، بازوؤں کے نیچے، یا جنگھاسوں میں سوجن ہونا کچھ دیگر امراض کی بھی عمومی عالمات ہوتی ہیں۔ لہذا، یہ یہ یقین کرلینے کے لئے کہ آپ کو ٹی بی ہی
ہے، آپ کو مختلف جانچیں کروانی ہوتی ہیں۔ جس فرد میں ان میں سے ایک یا ز یادہ عالمات ہوں اسے
جاکر کسی ڈاکٹر سے دکھانا چاہیے!
ٹی بی میں مبتال فرد میں یہ ساری عالمات نہیں ہوتی ہیں۔ کچھ افراد میں صرف معمولی
عالمات ہوتی ہیں۔
ٹی بی کس کو ہوسکتا ہے؟
جن افراد کا کافی لمبے عرصے سے تعدی زا پھیپھڑے کے ٹی بی کے حامل ایسے فرد کے ساتھ قر یبی رابطہ رہاہوتا ہے جنہوں نے ابھی تک معالجہ شروع نہیں کیا ہے انہیں یہ مرض ہوسکتا ہے۔ ٹی بی کے جراثیم آسانیسے نہیں پھیلتے ہیں، لہذا انفیکشن عام طور پر ایسے افراد کے درمیان پیدا ہوتے ہیں جو ساتھ ساتھ رہتے ہیں۔ہر ملک میں ٹی بی میں مبتال افراد ہیں۔ ٹی بی ایشیاء، افر یقہ، الطینی امر یکہ اور مشروقی یوروپ میں سب سےز یادہ عام ہے؛ لہذا اس امر کا ز یادہ امکان ہےکہ ان عالقوں سے تعلق رکھنے والے افراد اس سے متاثر اور بیمار
ہوجائیں۔
دنیامیں قر یب آٹھ ملین افراد کو ہر سال ٹی بی ہوتا ہے۔ ناروے میں، پچھلے چند سالوں کے دوران، ہر سال ٹی
بی کے قر یب 400–300 معامالت کا علم ہوا ہے۔اگر آپ دنیا میں ٹی بی کے بارے میں مز ید پڑھنا چاہتے ہیں تو، آپ و یب سائٹیں
ہیں۔ سکتے دیکھ https://stoptb.org یا www.fhi.no

گردن کے او پر، بازوؤں
کے نیچے، یا جنگھاسوں
میں سوجن ہونا
کچھ عرصے سے رات میں پسینہ آنا
کھانسی ہونا
کمزور اور تھکا ہوا
محسوس ہونا
بھوک کم ہوجانا
وزن کم ہوجانا

کیا آپ کا ٹی بی دوسروں کو بیمار کردے گا؟
صرف پھیپھڑے کے ٹی بی اور گلے کے ٹی بی کی ایک شاذ و نادر شکل ہی دوسروں کو منتقل ہوسکتی ہے۔
اگر آپ پھیپھڑے کے ٹی بی کی قابل منتقلی قسم کے حامل ہیں یا آپ کو شبہہ ہوتا ہے کہ آپ اس میں
مبتال ہیں تو آپ کو ہسپتال میں ایک الگ تھلگ وارڈ میں الیا جائے گا۔ آپ کو یہ تعین ہونے تک اس وارڈ
میں قیام کرنا ہوگاکہ آپ کا ٹی بی اب مز ید قابل منتقلی نہیں رہ گیا ہے۔ اس میں اکثر و بیشتر دو یا تین
ہفتے لگتے ہیں، لیکن کبھی کبھی اس میں اس سے ز یادہ وقفہ بھی لگ جاتا ہے۔
اس کا مطلب یہ ہے کہ جب آپ کو الگ تھلگ وارڈ سے رخصت کیا جاتا ہے تو، یہ مرض مز ید متعدی نہیں
رہ جاتا ہے۔
ناروے میں صحت خدمت یہ یقینی بنانے کی پابند ہے کہ ان سبھی افراد کو معالجہ موصول ہو جنہیں ٹی
بی ہے۔ انفیکشن کے حامل ہوسکنے والے سبھی افراد کا پتہ لگانے کے واسطے، مر یضوں سے ان افراد کا
نام بتانے کو کہا جاتا ہے جن کا ان کے ساتھ قر یبی تعلق رہا ہوتا ہے۔ صحت سے متعلق اہلکار ان افراد سے
رابطہ کرتے ہیں اور ان سے ٹی بی کی جانچ کروانے کو کہتے ہیں – انہیں یہ نہیں بتایا جاتا ہے کہ انہیں کس
کے ذر یعہ انفیکشن ہوا ہوسکتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ کسی بھی فرد کو یہ معلوم نہیں ہوگا کہ آپ
نے ہی ان کا نام بتایا ہے۔
اگر آپ کے پاس بچے ہیں، یا یہ پتہ چلنے سے قبل کہ آپ کو ٹی بی ہے بچوں کے ساتھ آپ کا قر یبی تعلق رہا
ہے تو، بچوں کو ایک مخصوص عرصے )عام طور پر تین ماہ( تک ٹی بی کی دوا لینی ہوتی ہے۔ یہ کام یہ یقینی
بنانے کے لئے ہوتا ہے کہ بچے بعد میں چل کر بیمار نہ ہوں۔
جب ٹی بی کے مر یضوں کو الگ تھلگ وارڈ سے رخصت کیا جاتاہے تو یہ مرض
مز ید متعدی نہیں رہ جاتا ہے:
• ٹی بی کے مر یضوں کے ساتھ پیالیوں، رکابیوں، چھر یوں، کانٹوں اور چمچوں کا اشتراک کرنا محفوظ ہے
• ایسے کپڑے یا بستر )بستر کی چادر یں( استعمال کرنا محفوظ ہے جنہیں ٹی بی کے مر یضوں
نے استعمال کیا ہے
• ٹی بی کے مر یضوں کے ساتھ حسب معمول، سماجی ربط ضبط بنانا محفوظ ہے
آپ ٹی بی کا عالج کیسے کرتے ہیں؟
ٹی بی کا عالج دوا، بیشتر معامالت میں ٹیبلیٹ سے ہوتا ہے۔ ناروے میں، یہ دوائیں بال معاوضہ ہیں۔ ز یادہ
تر مر یضوں کو دوائیں ہر روز چھ ماہ تک لینی ہوتی ہیں، لیکن کبھی کبھی معالجہ قدرے طو یل ہوتا ہے۔ ایک
صحت کارکن آکر آپ کو روزانہ دوا دے گا۔

ٹی بی کے عالج کے بارے میں مر یضوں
کی جانب سے سواالت
مجھے مختلف دوائیں کیوں درکار ہیں؟
آپ کو مختلف دوائیں اس وجہ سے درکار ہوسکتی ہیں کہ دوائیں ایک ساتھ کام کرتی ہیں اور جراثیم کو ہالک
کرنے میں ایک دوسرے کی مدد کرتی ہیں۔ ایک ساتھ مختلف دواؤں کے استعمال سے یہ یقینی بنانے میں
مدد ملتی ہے کہ جراثیم متمرد نہیں ہوجاتے ہیں۔ اگر آپ صرف ایک قسم کی دوا لیتے ہیں تو، جراثیم کسی اور
طر یقے سے زندہ بچ سکتے ہیں، لیکن جب آپ متعدد مختلف دوائیں لیتے ہیں تو، جراثیم زندہ نہیں بچیں گے۔
کیا میں خاندان کے ممبروں اور دیگر افراد کے ساتھ دواؤں کا اشتراک کرسکتا ہوں؟
نہیں، آپ کسی کے ساتھ بھی دواؤں کا اشتراک نہیں کرسکتے ہیں! یہ آپ دونوں ہی کو کافی بیمار بنا سکتا
ہے۔ سبھی مر یضوں کو وہی دوائیں لینی ہوتی ہیں جو ان کے ٹی بی کے ڈاکٹر نے ان کے لئے تجو یز کی ہوتی
ہیں، اور ٹی بی کی کوئی دیگر دوا نہیں لینی ہوتی ہے۔ سبھی مر یضوں کی بیماری کے عرصے میں ڈاکٹر کے
ذر یعہ ان کے ساتھ متابعتی کارروائی ہونا ضروری ہے۔
کیا مجھے دوائیں صبح میں لینا ضروری ہے؟ مجھے ٹیبلیٹ لینے کے بعد کھانے تک انتظار
کیوں کرنا ہوتا ہے؟
کچھ دوائیں خالی پیٹ ہونے پر بہتر ین کام کرتی ہیں، لہذا آپ یا تو صبح میں یا کھانے کے دو گھنٹے کے بعد
لے سکتے ہیں۔ آپ یہ دوائیں لینے کے بعد، آدھا گھنٹہ گزر جانے پر پھر سے کوئی چیز کھا سکتے ہیں۔
مجھے اتنے لمبے وقفے تک دوائیں کیوں لینی ہوتی ہیں؟ میں اپنی ذات کو بہتر محسوس
ہونے پر دوا لینا کیوں نہیں بند کرسکتا ہوں؟
آپ کو بہتر محسوس ہونا شروع ہونے کے بعد بھی ٹی کے کچھ جراثیم آپ کے جسم میں ابھی بھی باحیات
ہوتے ہیں۔ آپ اس بارے میں یوں سوچ سکتے ہیں کہ جراثیم سو رہے ہیں۔ اگر آپ دوا لینا بند کردیتے ہیں، تو
وہ بیدار ہوسکتے اور ایک بار پھر آپ کو بیمار کرسکتے ہیں۔ آپ کو یہ ثابت کرنے کے لئے طبی جانچیں کروانی
ہوتی ہیں کہ سارے جراثیم ہالک ہوگئے ہیں۔
کیا میں روایتی افاقہ بخش دوا استعمال کرسکتا یا نباتی دوا لے سکتا ہوں؟
عام طور پر، اس وقت تک کوئی مسئلہ نہیں ہوتا ہے جب تک آپ وہ دوا لینا جاری رکھتے ہیں جو آپ کے
ڈاکٹر نے آپ کے لئے تجو یز کی ہوئی ہے۔ لیکن، محفوظ جہت میں رہنے کے لئے، اگر آپ کا ارادہ نباتی دوا
لینے کا ہے تو آپ کو اپنے ٹی بی کے ڈاکٹر سے پوچھ لینا چاہیے – کچھ ایسی تدارکی دوائیں ہوسکتی ہیں
جو ٹی بی کی دواؤں کے ساتھ نہیں لی جانی چاہئیں۔
ٹی بی کی دوا دیگر دواؤں پر اثرانداز ہوتی ہے
ٹی بی کی دوائیں دیگر دواؤں کو کم مؤثر بنا سکتی ہیں۔ یہ ذہن نشیں رکھنا ضروری ہے کہ جس وقت
والی ٹکیاں استقرار حمل سے تحفظ فراہم نہیں کرتی ہیں۔ لہذا آپ کو خاندانی منصوبہ بندی کے ِ آپ ٹی بی کی دوا ر یفیمپیسن )Rifampicin )لے رہے ہوتے ہیں اس وقت خاندانی منصوبہ بندی
دیگر طر یقے، مثال، کنڈوم یا لوپ استعمال کرنا ضروری ہوتا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »
Close
Close