ریسکیو 1122کے اہلکاورں نے شہری کے 24ہزار روپے واپس کر دیے

رحیم یارخان:ریسکیو 1122 کو چک 124ون ایل باغ وبہار روڈ سے ایک کال موصول ہوئی۔جس میں کالر نے بتایا کہ ایک تیزرفتار موٹرسائیکل سوار جیپ سے ٹکرا گیا ہے اور جیپ سوار اسے رحیم یارخان کی طرف لا رہا ہے آپ ایمبولینس بھیج دیں۔
ریسکیو اہلکاروں نے بروقت ریسپانڈ کرتے ہوئے راستے سے اس بے ہوش نا معلوم شخص کو گاڑی سے لیا تووہ بے ہوش تھا طبی امداد کی فراہمی کے بعداس کا ایڈریس جاننے کے لیے جیبیں چیک کیں تو ایک عدد نوکیا موبائل اور مبلغ 24ہزار 2سو80روپے ملے۔
ایماندار ریسکیورز نے ملنے والا سامان آپریشنل شفٹ انچارج کو جمع کروایا اور حادثہ کا مکمل ریکارڈ رجسٹر پر درج کروایا۔
ریسکیو کنٹرول روم نے لواحقین کی تلاش کے لیے تگ و دو کی تو شیخ زید ہسپتال داخل کرائے گئے بے ہوش زخمی کے لواحقین کو ریسکیو اسٹیشن بلواکر تمام ضروری کاروائی کے بعد سامان ان کے حوالے کیا گیا۔
اس موقع پرغلام شبیر نے سامان وصول کرتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے میں شفٹ انچارج آصف الرحمن, ایمرجنسی میڈیکل ٹیکنیشنز عدنان افتخار,عبدالحق اور ریسکیوڈرائیور مصور کا تہہ دل سے مشکور ہوں کہ انہوں نے بے ہوش شخص کی رقم کو امانت سمجھتے ہوئے لواحقین کے حوالے کی۔
پھر اس نے کہا کہ ہم حیران ہیں کہ اس افراتفری کے دور میں ایسے ایماندار اہلکار کیسے ذمہ داریاں ادا کررہے ہیں یہ باتیں تو ہم کہانیوں میں سنتے تھے آج اپنی آنکھوں سے دیکھ کر یقین نہیں آرہا۔
ریسکیو آفیسر نے کہا ریسکیو 1122کی سروسز 24گھنٹے عوام کی خدمات میں مصروف رہتی ہیں ہمارے ریسکیورز کو بے ہوش افراد سے لاکھوں روپے, طلائی زیورات اور قیمتی اشیا ملتی ہیں
جسے فوری طور پر متعلقہ شفٹ انچارج کو جمع کرواتے ہوئے اسے ریکارڈ کا حصہ بنایا جاتاہے۔اور لواحقین کو تلاش کرکے سارا سامان واپس کیا جاتا ہے یہ ہمارے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹررضوان نصیر کی تربیت اور ان سے کیا گیا عہد ہے جس پر ہم ہمیشہ سے عمل پیرا ہیں۔ آخر میں لواحقین نے تمام ریسکیورز کا شکریہ ادا کیا اور ڈھیروں دعائیں دیں۔

اک نظر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Check Also
Close
Back to top button