fbpx

رحیم یارخان میں فیملی کورٹ کا انوکھافیصلہ

رحیم یارخان :فیملی کورٹ کا انوکھافیصلہ ،فیملی کورٹس کی تاریخ میں مثال قائم کر دی،ممتا کی فیملی جج کو جھولی اٹھا کر دعائیں۔

فیملی کورٹ ندیم اصغر ندیم کی کورٹ میں زیر سماعت مقدمہ طاہرہ رمضان بنام محمد خالد دعویٰ تنسیخ نکاح وخرچہ نان ونفقہ میں عدالت نے Holdکیا کہ طلاق یافتہ یا تنسیخ نکاح کے بعدماں جب تک نابالغ بچے کو دودھ پلائے گی وہ خرچہ نان ونفقہ کی حقدارہوگی،

عدالت نے نابالغ کو دودھ پلانے کی وجہ سے ماں کو سابقہ شوہر محمد خالدکو مبلغ 8ہزارروپے ماہانہ خرچہ نان ونفقہ دینے کے احکامات جاری کر دیئے۔

اس موقع پرمدعیہ طاہرہ رمضان نے اپنے وکیل کامران آصف ایڈوکیٹ کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ فیملی جج ندیم اصغرندیم کے اس فیصلہ پر ایک ماں ہونے کے ناطے شکر گزارہوں کہ انہوں نے مشکل کی اس گھڑی میں ایک ننھے بچے کی پرورش کے لئے خرچہ مقرر کر کے ہمارے لئے آسانیاں پیدا کی،

وکیل کامران آصف نے کہا کہ فیملی جج ندیم اصغر ندیم جب سے رحیم یارخان تعینات ہوئے ہیں انہوں نے ہمیشہ میرٹ پر اورجلد فیصلے کر کے سائلین کو انصاف فراہم کیا بلکہ جوڈیشری پر بھی بوجھ کم ہورہا ہے اوراس سے عوام میں عدالتوں پر مزید اعتماد بڑھ رہا ہے وکلاء برادری بھی ایسے پروفیشنل ججز کو سلام پیش کرتی ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Translate »