fbpx
رحیم یارخان

شیخ زاید ہسپتال میں ڈاکٹر نے لیبارٹری ٹیکنیشن کو گریبان سے پکڑ کر لیبارٹری سے باہر نکال دیا

رحیم یار خان : شیخ زید ہسپتال میں ڈاکٹر نے لیبارٹری ٹیکنیشن کو غلیظ گالیاں‘ دھکے اور گریبان سے پکڑ کر لیبارٹری سے باہر نکال دیا‘

لیبارٹری عملہ نے احتجاج کرتے ہوئے کام چھوڑ دیا اور کارروائی کیلئے پرنسپل شیخ زاید ہسپتال کو تحریری درخواست دے دی۔

تفصیل کے مطابق شیخ زید ہسپتال میں واقع لیبارٹری میں کام کرنے والے لیبارٹری ٹیکنیشن ذکریا اختر نے موقف اختیار کیا کہ وہ اپنی ڈیوٹی پر موجود تھا کہ اسی دوران ایک مریض(HBA1C)کا ٹیسٹ کروانے کیلئے آیا

جس کے پاس پرچی پر درج آؤٹ ڈور نمبر غلط تھا اور شناختی کارڈ کی کاپی موجود نہ تھی اسے لینے کیلئے وارڈ بھیجا اور وہ اپنا آؤٹ ڈور نمبر لے آیا اور شناختی کارڈ کی کاپی نہ لے کر آیا جسے دوبارہ شناختی کارڈ کی کاپی لینے کے لیے بھیجا تو واپسی پر آرتھو پیڈک واڑ کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر عبدالروف چوہدری ہمراہ آ گئے اور آتے ہی مجھے گریبان سے پکڑ کر غلیظ قسم کی گالیاں دیتے ہوئے دھکے مار کر لیبارٹری سے باہر نکال دیا اور نوکری سے نکلوانے اور لیبارٹری میں دوبارہ نظر نہ آنے کی دھمکیاں دیں‘

موقع پر موجود ساتھیوں نے منت سماجت کر کے جان بخشی کروائی‘ ذکریا حسین کے ساتھ ڈاکٹر کے اس رویے کے خلاف لیبارٹری کے عملہ نے کام چھوڑ کر احتجاج کرتے ڈاکٹر عبدالروف چوہدری کے خلاف کارروائی کیلئے پرنسپل شیخ زاید میڈیکل کالج وہسپتال کو تحریری درخواست دیدی۔

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Live Updates COVID-19 CASES
Translate »
Close
Close